قومی

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ ساہیوال پر جوڈیشل انکوائری کی تجویز دے دی۔

لاہور ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی، سرکاری وکیل نے بتایا کہ سانحہ ساہیوال کے تمام ملزم جسمانی ریمانڈ پر ہیں۔ اے ایس آئی عباس کا بیان قلمبند کر لیا ہے۔ جے آئی ٹی جائے وقوعہ کا بار بار دورہ کر رہی ہے،عدالت نے سرکاری وکیل سے استفسارکیا کہ چشم دید گواہوں کے بیانات سے عدالت کو آگاہ کیا جائے،سرکاری وکیل نے بتایا ابھی تک کسی چشم دید گواہ کا بیان ریکارڈ نہیں ہوا، چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ سب کچھ ہو رہا ہے لیکن کاغذوں میں کچھ نہیں ہوا۔ چیف جسٹس نے ہدایت کی کہ واقعہ کے عینی شاہد عمیر خلیل کا بیان آج ہی قلمبند کرایا جائے۔ اگر متاثرین چاہیں تو جوڈیشل انکوائری کا حکم بھی دیا جا سکتا ہے، عدالت نے کیس کی مزید سماعت ایک ہفتے تک ملتوی کر دی

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers