قومی

رحمان ملک کے بھارت سے اکیس سوال

سابق وزیرِداخلہ سینیٹر رحمان ملک نے پلواما حملے پر نئی دہلی کی سازش کو بےنقاب کرنے کیلئے بھارت سے اکیس سوالوں کے جواب مانگ لئے ،، پوچھا ہے کہ حملے کا نشانہ صرف سکھ سپاہی ہی کیوں بنے ، واقعہ کا فائدہ کسے پہنچا۔ پاکستان یا بھارت کو ؟
رحمان ملک نے بیان میں کہا ہے کہ پلواما حملہ قابل مذمت ہے ۔ انہوں نے واقعہ پر بھارتی حکومت، عوام اور وہاں کے وکلاء برادری سے 21 سوالات پوچھے ہیں ۔
ان سوالات میں پوچھا گیاہے کہ کیوں مرنے والے 44 سپاہیوں میں سے زیادہ تر غریب سکھ تھے۔ بغیر تفتیش کے بھارتی حکومت نے کیسے پاکستان کو موردالزام ٹہرایا ۔ جیش محمد کی تردید کے باوجود اس پر کیوں ذمہ داری ڈالی گئی ۔ حملے کا نشانہ بننے والا کانوے کمانڈر کون تھا اور حملے کے وقت کہاں وہ تھا ۔ کیا حملے کی ذمہ داری قبول کرنے والے کو ماضی میں کبھی حراست میں لیا گیا تھا ۔ بارود بھری گاڑی ، فورسز کانوائے میں کیسے داخل ہوگئی اور اس گاڑی کی کیا تفصیلات ہیں ۔ انہوں نے پوچھا ہے کہ کرتارپور بارڈر کے کھلنے سے بھارتی حکومت پریشان تو نہیں ہے ۔ کیوں کسی کشمیری رہنماء نے سانحہ پلواما کیلئے پاکستان کو موردالزام نہیں ٹھرایا ۔ کہیں امریکہ اور طالبان کو ایک میز پر لانے کی پاکستانی کوشش ، بھارت کو بری تو نہیں لگی ۔ اس واقعہ کا حقیقی فائدہ کسے پہنچا ، پاکستان کو یا بھارت کو؟

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers