بین الاقوامی

بھارتی قابض فورسز کی ظالمانہ کارروائی، زیر حراست استاد تشدد سے شہید

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی قابض فورسز کی ظالمانہ کارروائی جاری ہیں. نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی نے زیر حراست استاد کو تشدد کر کے شہید کر دیا۔ کشمیریوں کو احتجاج سے روکنے کے لئے گزشتہ ستتر(77) دنوں میں سات سو(700) سے زائد رہنماؤں اور شہریوں کو گرفتار کیا گیا. مقبوضہ وادی میں نہتے کشمیریوں کا خون بہانے کا سلسلہ، عام شہری تو ایک طرف، اساتذہ بھی بھارتی فوج کے مظالم سے محفوظ نہیں.
رضوان اسد نامی ٹیچر کو ایک ماہ سے نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی نے قید کر رکھ اتھا۔ زیادہ تشدد کی وجہ سے وہ جام شہادت نوش کر گئے۔ ان کی شہادت کی خبر سنتے ہی لوگ احتجاج کرنے نکل آئے۔ پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے فائرنگ کی اور آنسو گیس پھینکی.
ادھر حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق ایک جھوٹے کیس کے سلسلے میں دارالحکومت نئی دہلی میں نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی کے سامنے پیش نہ ہوئے۔ان کے وکیل نے ایجنسی کو خط لکھا کہ انہیں جان کا خطرہ ہے۔ سری نگر میں ہی پوچھ گچھ کر لی جائے. دوسری جانب حریت رہنماؤں سید علی گیلانی، یاسین ملک اور میر واعظ عمر فاروق نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کشمیر میں تحریک آزادی کو دبانا دیوانے کا خواب ہے۔
آزادی کی لہر کو دبانے کے لئے بھارتی حکومت نے وسیع پیمانے پر گرفتاریاں کی ہیں۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق گزشتہ ستتر دنوں میں پولیس نے سات سو سے زائد مذہبی رہنماؤں اور شہریوں کو گرفتار کیا ہے.

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers