بین الاقوامی

پاک بھارت کشیدگی، امریکی وزیر خارجہ نے ملبہ پاکستان پر ڈال دیا

امریکا پاکستان کے خلاف ایک بار پھر الزام تراشیوں پر اتر آیا۔ امریکی وزیر خارجہ نے پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو امریکا کی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دے دیا۔ پاکستان میں دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کا گھسا پٹا الزام دہراتے ہوئے ایک بار پھر “ڈو مور” کا مطالبہ بھی کر دیا۔
دہائیوں پر محیط بنتے بگڑتے پاک امریکا تعلقات میں نیا موڑ آگیا۔ امریکی وزیر خارجہ نے پاکستان کے خلاف ایک بار پھر الزامات کا کھاتہ کھول دیا. ایک امریکی ریڈیو کو انٹریو میں مائیک پومپیو کا کہنا تھا امریکی سلامتی کو پانچ بڑے خطرات لاحق ہیں اور ان میں سے ایک پاکستان کا ایٹمی پروگرام ہے جو غلط ہاتھوں میں لگ سکتا ہے۔
امریکی وزیر خارجہ نے پاکستان میں دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کی موجودگی کا الزام بھی دہرا دیا اور حالیہ پاک بھارت کشیدگی کا ملبہ بھی پاکستان پر ڈال دیا۔بولے اس کشیدگی کی وجہ پاکستان سے جانے والے دہشت گرد بنے پاکستان کو انہیں روکنے کے اقدامات کرنا ہوں گے۔ مائیک پومپیو نے دعویٰ کیا پاکستان کے خلاف سب سے زیادہ ایکشن ٹرمپ انتظامیہ نے لیے اور پاکستان کو دہشت گردوں کے خلاف مزید اقدامات پر مجبور کیا.
ابھی کچھ ہی عرصہ پہلے امریکی صدر نے پاکستان کو خط لکھ کر افغان طالبان کو مذاکرات کی میز پر لانے کی اپیل کی تھی۔ جس کے بعد پاکستان کی کوششوں سے دوحہ میں امریکا اور طالبان کے درمیان مذاکرات کا آغاز ہوا۔ پاکستان کی اس بڑی مدد کی امریکی حکام نے بڑھ چڑھ کر تعریف کی۔ اسی طرح پاکستان نے کالعدم تنظیموں کے خلاف کارروائیوں کا آغاز کیا تو اس پر بھی امریکا نے اطمینان کا اظہار کیا مگر امریکی رویے میں اس اچانک تبدیلی اور پاکستان پر الزامات کی بوچھاڑ نے امریکا کی دوغلی پالیسی ایک بار پھر بےنقاب کردی ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers