بین الاقوامی

مہاتیر محمد جدید ملائشیا کے بانی

ملائشین وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد نے اپنے گزشتہ دور اقتدار میں اپنے ملک کو صف اول میں کھڑا کر دیا۔ اس کامیابی کی وجہ مہاتیر محمد کی پالیسیاں ہیں جن کی وجہ سے ملائشیا دنیا کے نقشے پر ایک خود مختار ریاست کے طور پر ابھرا۔
ڈاکٹر مہاتیر محمد ملائشیا کے ساتویں وزیراعظم ہیں۔ وہ اس سے پہلے بھی بائیس سال تک ملک کے وزیراعظم رہ چکے ہیں۔ انہوں نے ملائشیا کی ترقی کے لیے فیصلہ کن اقدامات کیے۔ مہاتیر محمد نے ملائشیا کو جاپان کی طرز پر صنعتی ملک بنایا، جس سے اس کی ترقی کے دروازے کھلے۔ صنعتیں لگنے سے ملائشیا کی درآمدات میں نمایاں کمی دیکھنے میں آئی۔
مہاتیر محمد نے لوگوں کی فنی تربیت پر طرف بھی راغب کیا، جو درآمدات میں گراوٹ کی ایک اور بڑی وجہ بنی۔ الیکٹرونکس کے میدان میں ملائشیا نے کافی ترقی کی جس کی وجہ سے اس کی معیشت مستحکم ہو گئی۔ مہاتیر محمد انیس سو نوے (1990) کی دہائی میں انفراسٹرکچر اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے میدان میں بھی جدت لائے، جس کے باعث ملائشیا کی معیشت کو بے پناہ فائدہ ہوا۔
دوبارہ ملائشیا کا وزیراعظم بننے پر مہاتیر محمد کو معاشی میدان میں پھر سے چیلنجز کا سامنا ہے اور یہی صورتحال پاکستان کو بھی درپیش ہے۔ بحران سے نمٹنے کے لیے وزیراعظم عمران خان، ڈاکٹر مہاتیر کو اپنا رول ماڈل قرار دیتے ہیں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers