قومی

مفتی تقی عثمانی پر حملے میں استعمال ہونے والے اسلحے کی فرانزک جانچ مکمل

کراچی میں مفتی تقی عثمانی پر حملے میں استعمال ہونے والے اسلحے کی فرانزک جانچ مکمل کر لی گئی ہے. واردات میں استعمال ہونے والا اسلحہ اس سے پہلے کسی واردات میں استعمال نہیں ہوا۔
کراچی میں مفتی تقی عثمانی پر حملے پر حملے کی تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ واردات میں استعمال ہونے والے اسلحہ اس سے پہلے کسی واردات میں استعمال نہیں ہوا۔ حملہ آوروں نے کورنگی میں سنگر چورنگی کے نزدیک سے مفتی تقی عثمانی کا پیچھا شروع کیا. حملہ آور موٹر سائیکلوں پر سوار تھے. حملے سے قبل چار دہشتگردوں نے گاڑی پر انتہائی نزدیک سے فائر کیے جبکہ دو دہشتگردوں نے رفقا کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔ تکنیکی تحقیقات میں بیس موبائل فون نمبرز کو مشکوک قرار دیا گیا ہے اور ان نمبروں کے مالکان سے بھی تحقیقات کی جا رہی ہیں.

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers