قومی

سکول کے بھاری بستے، پشاور ہائیکورٹ کا 4 ماہ میں قانون سازی کرنے کا حکم

پشاور ہائیکورٹ نے سکول کے بھاری بھر کم بستوں سے متعلق کیس میں صوبائی حکومت کو چار ماہ میں قانون سازی کا حکم دے دیا. پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس قیصر رشید اور جسٹس ابراہیم پر مشتمل بنچ نے سکول کے بچوں کے بھاری بھر کم بستوں سے متعلق کیس کی سماعت کی. چیف سیکرٹری سلیم خان، سیکرٹری ایجوکیشن اور دوسرے افسر عدالت میں پیش ہوئے. دوران سماعت جسٹس قیصر رشید نے ریمارکس دئیے کہ بھاری بھر کم بیگ کی وجہ سے بچوں کی صحت متاثر ہو رہی ہے. صوبائی حکومت کی اس حوالے سے کارکردگی اطمینان بخش نہیں ہے۔ اس موقع پر چیف سیکرٹری نے عدالت کو بتایا کہ اس حوالے سے قانون سازی کی جا رہی ہے. سری لنکا کی طرز پر یہاں بھی قانون لا رہے ہیں جس کیلئے وقت دیا جائے جس پر دو رکنی بنچ نے کیس کی سماعت دو جولائی تک ملتوی کر دی۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers