قومی

اسد عمر نے کپتان کے دفاع میں پیپلز پارٹی کو آڑے ہاتھوں لیا

کپتان کے دفاع میں سابق وزیر خزانہ اسد عمر نے پیپلز پارٹی کو آڑے ہاتھوں لیا۔ زرداری دور حکومت کو ملکی معیشت کا بد ترین عرصہ قرار دے دیا. خورشید شاہ بولے اسد عمر کو پیپلز پارٹی والے حفیظ شیخ پر غصہ ہے۔ بلاول بھٹو نے ٹویٹ میں نا اہلی پر نکالے جانے کا طعنہ دے دیا۔
وفاقی کابینہ میں تبدیلی اور ملکی معیشت پر بلاول بھٹو کی تنقید کا جواب دینے کیلئے اسد عمر قومی اسمبلی پہنچے۔ خطاب میں 2008ء سے 2013ء والی پیپلز پارٹی حکومت کو بد ترین معاشی دور قرار دے دیا. کہا کہ تب جی ڈی پی کی اوسط سالانہ شرح 2 اعشاریہ 7 فیصد رہی جو پہلے کبھی نہیں ہوئی. مہنگائی شرح بھی ریکارڈ 12 فیصد رہی. قرضوں میں 135 فیصد اضافہ ہوا.
اسد عمر نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے چار سورما وزراء خزانہ بدلے تو بلاول صاحب کیا تب آپ نا کام ترین تھے؟ تنقید اس لئے ہو رہی ہے کہ غیر ملکی اپارٹمنٹس، سوئس اکاونٹس خطرے میں ہیں، فالودے والے پکڑے گئے ہیں۔ اسد عمر بات کر کے چلے گئے تو جواب دینے خورشید شاہ آئے، بولے کہ اسد ہم پر نہیں پیپلز پارٹی والے حفیظ شیخ پر ناراض ہیں۔
خورشید شاہ نے کہا کہ پیپلز پارٹی دور میں عالمی کساد بازاری اور ملک میں دہشتگردی عروج پر تھیں لیکن ہم نے ملک کو سنھبالا اور 2013ء میں لوگوں نے سکھ کا سانس لیا. سوات پر اترتے قومی پرچم کو واپس لہرایا. تب پیٹرولیم پر دس روپے فی لٹر لیوی دو روپے کی، اب پھر اٹھارہ روپے ہو چکی ہے. انکا ہم سے کیا مقابلہ، کہاں راجہ بھوج کہاں گنگو تیلی۔
اسد عمر کی تنقیدی تقریر پر بلاول بھٹو زرداری نے ٹویٹر پر جواب وار کیا. لکھا کہ نا اہلی پر نکالے جانے والے کیسے دوسروں کی معاشی پالیسی کو ناقص کہہ سکتے ہیں. اسد عمر کی بات مان بھی لیں تو بتائیں کہ عمران خان نے پیپلز پارٹی دور کا وزیر خزانہ کیوں مقرر کیا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers