قومی

سپریم کورٹ نے پری پیڈ موبائل پر 32 فیصد ٹیکسز کو بحال کر دیا

موبائل فون کے سو روپے والے ریچارج پر سو کے مزے ختم ہو گئے۔ اب سو کا لوڈ کرنے پر ستر روپے ہی ملیں گے۔ سپریم کورٹ نے پری پیڈ موبائل پر 32 فیصد ٹیکسز کو بحال کر دیا۔
موبائل فون کے پری پیڈ استعمال پر ایڈوانس ٹیکسز کیخلاف سپریم کورٹ نے 11 جون 2018 کو حکم امتناعی جاری کیا تھا۔ اس کے تحت فون ریچارج اور کارڈ سے بیلنس لوڈ کرانے پر ساڑھے 12 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس اور ساڑھے 19 فیصد سیلز ٹیکس کی وصولی رک گئی تھی۔ پھر صارفین کو سو کے لوڈ پر سو کا بیلنس ملنے لگا تھا۔
اب سپریم کورٹ نے یہ ٹیکسز بحال کر دیئے۔ اب ہر پری پیڈ ریچارج پر 32 فیصد ٹیکسز عائد ہونگے۔ سو روپے کا ریچارج کرانے پر 75 روپے یا اس سے کچھ کم کا ہی بیلنس ملے گا۔ اس پر عملدرآمد کا آغاز متعلقہ محکموں اور اداروں کو تحریری عدالتی حکم ملتے ہی شروع ہو جائے گا۔ عدالتی حکم کے مطابق یہ معاملہ پبلک ریونیو اور ٹیکس معاملات میں مداخلت کیے بغیر نمٹایا جا رہا ہے کیونکہ ایسا کوئی معاملہ باقاعدہ طور پر عدالت کے سامنے دائر ہی نہیں ہوا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers