بین الاقوامی

غزوہ بدر: حق اور باطل کے درمیان پہلا معرکہ

غزوہ بدر حق اور باطل کے درمیان پہلا معرکہ ہے جو سترہ رمضان المبارک دو ہجری میں حضور نبی اکرم ﷺ کی زیر قیادت کفار مکہ کے خلاف لڑا گیا. غزوہ بدر میں اللہ تعالیٰ نے مسلمانوں کو تاریخی فتح و نصرت سے نوازا. تین سو تیرہ صحابہ کرام علیھم الرضوان اور کفار کا ایک ہزار افراد پر مشتمل لشکر جرار، رسول اکرم ﷺ کی قیادت میں صحابہ کرام علیھم الرضوان کی مختصر سی جماعت نے بڑے لشکر کا تکبر خاک میں ملا دیا۔
غزوہ بدر میں مسلمانوں نے شجاعت و بہادری کی داستانیں رقم کر دیں. کفار مکہ کا لشکر جرار مجاہدین اسلام کے سامنے زیادہ دیر نہ ٹھہر سکا. کفار کے لشکر کا سپہ سالار ابوجہل دو بچوں معوذ اور معاذ کے ہاتھوں مارا گیا. جنگ بدر میں چودہ صحابہ کرام علیھم الرضوان نے جام شہادت نوش کیا، جب کہ مقابلے میں ستر کفار واصل جہنم ہوئے۔
غزوہ بدر میں مسلمانوں کی فتح سے دنیا پر واضح ہو گیا کہ نصرت الہیٰ کی بدولت مومنین اپنے سے کئی گنا فوج کو شکست دے سکتے ہیں. مسلمانوں کے تقویٰ اور اطاعت رسول ﷺ کی وجہ سے اُن کی برتری روز روشن کی طرح ثابت ہو گئی اور کفار کے حوصلے پست ہوئے۔

Comment here

instagram default popup image round
Follow Me
502k 100k 3 month ago
Share