بین الاقوامی

کرتاپور راہداری منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں داخل

شکر گڑھ میں کرتار پور راہداری پر تعمیراتی کام تیزی سے جاری ہے. زیرو لائن تک راہداری اور بارڈر ٹرمینل تکمیل کے مراحل میں ہے. جب کہ سکھ یاتریوں کی سہولت کے لیے بارڈر ٹرمینل پر ایک سو کاؤنٹر بھی قائم ہوں گے. منصوبے کا پہلہ مرحلہ ستمبر میں مکمل ہو جائے گا.
شدید موسم اور دریائے راوی میں طغیانی کے باوجود کرتار پور راہداری منصوبے پر کام جاری ہے. سینکڑوں ورکر، دن رات تعیراتی کام میں مصروف ہیں. راہداری منصوبے کے پہلے مرحلے میں زیرو پوائنٹ تک سڑک اور بارڈر ٹرمینل کی تعمیر حتمی مرحلے میں ہے. نالہ بئیں کو دریائے راوی سے ملا دیا گیا ہے جب کہ 800 میٹر طویل پل بنانے کا کام بھی آخری مرحلے میں ہے. سیلابی پانی سے بچاؤ کے لئے حفاظتی پشتوں کو مکمل کیا جا رہا ہے.
گوردوارہ کی تزئین و آرائش جاری ہے جب کہ انٹری پوائنٹ، تالاب، انگھیٹا صاحب، لنگر حال، گرنتھی ہاؤس، بارہ دری اور پارکنگ ٹرمینل بھی تکمیل کے قریب ہیں. سات سو یاتریوں کو ٹھہرانے کے لیے رہائشی بلاک بھی مکمل کیا جا رہا ہے. کرتار پور راہداری منصوبے کا پہلا مرحلہ ستمبر میں مکمل ہو گا جس کے بعد بابا گورو نانک کے 550 ویں جنم دن سے پہلے اسے وقف املاک بورڈ کے حوالے کر دیا جائے گا. حکام کے مطابق دوسرا مرحلہ بھی 2022 تک مکمل ہونے کی امید ہے.

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers