قومی

خیبر پختونخوا بجٹ 20-2019 آج پیش کیا جائے گا

خیبر پختونخوا کا نو سو ارب روپے سے زائد سر پلس بجٹ برائے دو ہزار انیس-بیس (20-2019) آج پیش کیا جائے گا. خیبر پختونخوا کے لئے ساڑھے سات سو ارب جب کہ قبائلی اضلاع کے لئے ایک سو تریسٹھ ارب روپے مختص کئے گئے ہیں.
وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا آج تین بجے اگلے مالی سال کا بجٹ پیش کریں گے. تین سو ارب روپے سے زائد ترقیاتی پروگرام میں خیبر پختونخوا کے لئے دو سو نو ارب روپے اور قبائلی اضلاع کے لئے تراسی ارب روپے مختص کرنے کی تجویز ہے. صوبائی کابینہ کے ارکان کی تنخواہوں میں دس فیصد کمی کی تجویز ہے۔ کم از کم اجرت ساڑھے سترہ ہزار روپے، گریڈ ایک سے سولہ تک سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں دس فیصد اور گریڈ سترہ سے انیس تک پانچ فیصد اضافے کی تجویز ہے. گریڈ بیس سے بائیس تک افسروں کی تنخواہوں میں اضافہ نہیں کیا جائے گا. پنشن میں دس فیصد اضافے کی تجویز ہے. بلدیاتی اداروں کے لئے چھتیس ارب روپے، تعلیم کے لئے ایک سو باسٹھ ارب روپے رکھے گئے ہیں. بجٹ میں پشاور اور ہنگو میں وزیراعظم سستا گھر سکیم کا اجراء بڑے منصوبوں میں شامل ہے. صحت انصاف کارڈ پروگرام کو قبائلی اضلاع تک توسیع دینے کی تجویز ہے. نوجوانوں کو بلا سود قرضے، بندوبستی اضلاع اور ضم شدہ قبائلی اضلاع میں صحت، تعلیم، کھیل، سیاحت، مواصلات اور پینے کے صاف پانی کی سکیمیں بھی بجٹ کا حصہ ہیں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers