بین الاقوامی

ایران کا اپنی فضائی حدود میں امریکی جاسوس ڈرون مار گرانے کا دعویٰ

ایران نے آبنائے ہرمز کے قریب اپنی فضائی حدود میں گھسنے والا امریکی ڈرون مار گرانے کا دعوی کیا ہے، جبکہ امریکہ کا کہنا ہے کہ اس کا ڈرون عالمی فضائی حدود میں پرواز کر رہا تھا۔
امریکہ ایران کشیدگی بڑھنے لگی۔ امریکی حکام نے تصدیق کی ہے کہ آج ایرانی فوج نے امریکہ کا ایک جاسوس ڈرون طیارے کو مار گرایا ہے۔ امریکی حکومت نے ایرانی موقف کی تردید کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی ڈرون نے ایران کی فضائی حدود کی خلاف ورزی نہیں کی، بلکہ ڈرون طیارہ آبنائے ہرمز پر عالمی فضائی حدود میں پرواز کر رہا تھا جسے ایران نے زمین سے فضاء میں مار کرنے والے میزائل سے نشانہ بنایا ہے۔
ایران کی سرکاری خبر ایجنسی اِرنا نے خبر دی تھی کہ آج صبح ایرانی صوبہ ہرمزگان کے علاقہ کوہ مبارک میں پاسداران انقلاب فورس نے امریکی جاسوس ڈرون مار گرایا ہے۔ پاسدران انقلاب کا دعوی ہے کہ ڈرون کو ایرانی لڑاکا جہاز سے نشانہ بنایا گیا۔ ڈرون نے ایرنی فضائی حدود کی خلاف ورزی کی تھی، جس علاقے میں ڈرون گرایا گیا وہ دارالحکومت تہران سے بارہ سو کلومیٹر جنوب مشرق میں واقع ہے۔
مار گرایا جانے والا ڈرون آر کیو فور گلوبل ہاک ہے۔ یہ ڈرون 60 ہزار فیٹ کی بلندی پر مسلسل 30 گھنٹے تک پرواز کر سکتا ہے. اس میں جدید کیمرے اور دیگر جاسوسی کے آلات نصب ہوتے ہیں۔ اسے دنیا کا جدید ترین جاسوس ڈرون مانا جاتا ہے۔
امریکی میڈیا نے خدشہ طاہر کیا ہے کہ ایران کی جانب سے ڈرون تباہ کرنا ٹرمپ انتظامیہ کو سخت جواب دینے پر مجبور کر سکتا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers