قومی

کوٹ لکھپت جیل میں نواز شریف سے اہلخانہ کی ملاقات

کوٹ لکھپت جیل لاہور میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف، مریم نواز اور نواز شریف کی والدہ شمیم بی بی نے سابق وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کی. شہباز شریف کی گاڑی تلے کارکن کا پاؤں کچلا گیا. نواز شریف کے معالج ڈاکٹر عدنان نے ٹویٹ میں بتایا کہ ملاقات سے روکنا افسوس ناک ہے۔
سنٹرل جیل کوٹ لکھپت لاہور میں قید سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے طبیعت کی خرابی کے باعث جیل میں پارٹی رہنماؤں سے ملاقاتیں منسوخ کر دیں اور صرف اہل خانہ سے ملاقات کی۔ شہباز شریف کی آمد کے موقع پر گوجرانوالہ کے رہائشی کارکن راشد گاڑی کے آگے نعرے لگا رہا تھا کہ گاڑی کے نیچے آ گیا، جس سے راشد کے پاؤں کی ہڈی ٹوٹ گئی. زخمی کو فوری طبی امداد کے لیے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ کوٹ لکھپت جیل کے باہر مسلم لیگ ن کے کارکنوں نے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔ لیگی رہنما عطاء اللہ تارڑ نے کہا ہے کہ حکمرانوں کے لئے جیل میں بھی قید نواز شریف بدستور خوف کی علامت بنا ہوا ہے۔ ان کا کہنا تھا سابق وزیراعظم کی جیل میں ہفتہ وار ملاقاتیں سیاست کا محور بنتی جا رہی تھیں، اس لئے منسوخ کی گئیں۔ نواز شریف کے معالج ڈاکٹر عدنان نے ٹویٹ کیا ہے کہ وہ دو گھنٹے تک جیل کے باہر نواز شریف سے ملاقات کے لئے کھڑے رہے لیکن ان کو ملنے نہیں دیا گیا.

About Author

Comment here

Subscribers
Followers