قومی

کراچی، نادرن بائی پاس بروہی گوٹھ میں مبینہ پولیس مقابلہ، 3 دہشتگرد ہلاک

کراچی میں دہشت گردی کا منصوبہ ناکام بنا دیا گیا۔ نادرن بائی پاس بروہی گوٹھ میں مبینہ پولیس مقابلے میں القاعدہ کراچی کے امیر سمیت تین دہشت گرد مار دیئے گئے. ملزموں کے ٹھکانے سے دس کلو وزنی خودکش جیکٹ، دستی بم ڈیٹونیٹر اور جدید اسلحہ سمیت بم تیار کرنے کا سامان برآمد کیا گیا.
نادرن بائی پاس اللہ بخش گوٹھ میں مکان میں چھپے تین دہشت گرد پولیس مقابلے میں انجام کو پہنچ گئے. حساس ادارے کی اطلاع پر پولیس نے چھاپہ مارا تو دہشت گردوں نے پولیس پر گولیوں کی بوچھاڑ کر دی. بم ڈسپوزل اسکواڈ کے مطابق دہشت گردوں سے برآمد خودکش جیکٹ میں دس کلو بارودی مواد تھا، جو بڑی تباہی مچا سکتا تھا.
علاقہ مکینوں کا کہنا ہے فائرنگ ایک گھنٹے تک جاری رہی. دہشت گردوں کا ٹھکانہ ڈیڑھ ماہ سے خالی تھا. پہلے کچھ افراد مکان میں بیٹھ کر پراپرٹی کا کام کرتے تھے.
ہلاک تین دہشت گردوں میں سے دو کی شناخت عثمان اور طلعت محمود کے نام سے ہوئی. مارا گیا دہشت گرد طلعت محمود عرف یوسف کا ریکارڈ بھی جمع کر لیا گیا ہے. ہلاک دہشت گرد القاعدہ کراچی سیٹ اپ کا امیر اور سانحہ صفورہ میں ملوث دہشتگردوں کا قریبی ساتھی تھا. دہشتگرد کا تعلق القاعدہ عبدالرزاق عرف راجہ گروپ سے تھا.
پولیس نے دہشت گردوں کے ٹھکانے سے دیگر شواہد تحویل میں لے کر مکان کو سیل کر دیا.

About Author

Comment here

Subscribers
Followers