قومی

ٹیکس کی ایک ایک پائی عوام پر خرچ کی جائےگی، عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے عوام سوچتے ہیں ٹیکس نیٹ میں آ گئے تو انہیں تنگ کیا جائے گا۔ وہ یقین دلاتے ہیں، کوئی ادارہ لوگوں کو تنگ نہیں کرے گا۔ ٹیکس کی ایک ایک پائی عوام پر خرچ کی جائے گی۔
ملک آج دوراہے پر کھڑا ہے، جتنا قرض آج لے رہے ہیں اس کا آدھا پرانے قرضوں کے سود پر چلا جاتا ہے. ملکی ترقی کیلئے خود کو بدلنا ہو گا. وزیراعظم عمران خان نے ملک کو سنوارنے کے لیے عوام کو ایک بار پھر ٹیکس ایمنسٹی سکیم سے فائدہ اٹھانے کی اپیل کر دی۔ ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا ملک آج جس حال کو پہنچا ہے اس کی وجہ کرپشن ہے۔ کرپشن کی وجہ سے لوگ ٹیکس نہیں دیتے۔ یقین دلاتا ہوں ٹیکس کی ایک ایک پائی عوام پر خرچ کی جائے گی۔ عوام سوچتے ہیں ٹیکس نیٹ میں آ گئے تو انہیں تنگ کیا جائے گا۔ وہ یقین دلاتے ہیں، کوئی ادارہ لوگوں کو تنگ نہیں کرے گا.
وزیراعظم نے خبردار کیا ایمنسٹی سکیم سے دوبارہ فائدہ اٹھانے کا موقع نہیں ملے گا۔ ساتھ ہی اثاثے چھپانے والوں کو بھی الرٹ کر دیا۔ عوام تیس (30) جون سے پہلے اپنے اثاثے ظاہر کر دیں۔ اس کے بعد مزید وقت دیا تو لوگ سمجھیں گے نئی سکیم بھی آئے گی۔ حکومت کے پاس معلومات موجود ہیں، ماضی میں ایسا نہیں تھا۔ بے نامی اکاؤنٹس کے حوالے سے بھی قوانین بن چکے ہیں۔ ملک تب چلتا ہے جب حکومت اور عوام آپس میں مل کر چلتے ہیں. اگر ٹیکس نہیں لیں گے تو ملک کیسے چلے گا؟
کپتان نے عوام سے اپیل کی کہ ٹیکس ادائیگی کو قومی فریضہ سمجھیں۔ میرے سارے اثاثے ڈکلیئرڈ ہیں، میں نے بیرونِ ملک کمائی کی اور پیسہ پاکستان لے کر آیا۔ سب سے اپیل کر رہا ہوں، اپنے ملک کیلئے کر ڈالیں، ورنہ بے نامی اثاثوں کو ضبط کرنا ہماری مجبوری ہو گا۔ اگر کسی کے پاس ٹائم نہیں تو 30 جون سے پہلے کم از کم خود کو رجسٹر کر لے. 30 جون کے بعد مزید وقت دیا تو لوگ سمجھیں گے اور بھی اسکیم آئے گی.
وزیراعظم عمران خان نے نہ صرف کفایت شعاری مہم کے تحت کم کیے گئے اخراجات کا بتایا بلکہ ٹیکس گزاروں کو ان تک رسائی حاصل کرنے کا طریقہ بھی بتا دیا۔ وزیراعظم ہاؤس کا خرچہ پینتیس (35) فیصد کم کر دیا ہے۔ کابینہ ارکان نے دس فیصد تنخواہیں کم کر دی ہیں۔ افواج پاکستان نے اپنے خرچ میں کمی کی ہے۔ اپنی ٹیم کو کہا ہے اسپیشل ہیلپ لائن قائم کریں جہاں کسی کو شکایت ہو تو وہ بتائے. وزیراعظم ہاؤس کے پورٹل میں ایسا نظام بنا دیں گے کہ لوگ مجھ سے براہ راست بات کر سکیں گے۔ وزیراعظم ہاؤس میں سٹیٹ آف دی آرٹ یونیورسٹی بنا رہے ہیں.
کپتان نے نام لیے بغیر ایک سیاستدان کی بیرون ملک عیاشیوں کا بھید بھی کھول دیا۔ ایک سیاستدان نے اپنے نوکروں کے نام پر دبئی میں 5 گھر لیے ہوئے ہیں مگر یاد رہے یہ سکیم سیاستدانوں اور پبلک آفس ہولڈرز کیلئے نہیں ہے. وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا پاکستان کو ایسا ملک بنائیں گے جہاں ریاست کمزور لوگوں کی ذمہ داری لے۔ پاکستان جہاں آج کھڑا ہے ان حالات میں عوام اور حکومت دونوں کو بدلنا ہو گا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers