قومی

ملتان کی تاریخ روشنی سے جگمگانے لگی، دیکھنے والوں پر سحر طاری

ملتان بیوٹیفکیشن پلان کے تحت مدینۃ الاولیا ملتان کی تاریخ روشنیوں سے جگمگانے لگی. روشنی میں نہائے صدیوں پرانے مقبرے، گھنٹہ گھر سمیت تاریخی عمارتیں دیکھنے والوں پر سحر طاری کرنے لگیں.
تاریخی شہر ملتان میں جب شام ڈھلتی ہے تو اسکی قدیم عمارتوں پر دمکتی روشنیاں دیکھنے والوں کو اپنے سحر میں مبتلا کر دیتی ہیں. روشنی میں نہائی شہر کے وسط میں قائم گھنٹہ گھر کی ایک سو پینتیس (135) سال عمارت عجب منظر پیش کرتی ہے. ملتان بیوٹی فکیشن پلان کے تحت حضرت بہاؤالدین زکریا ملتانی اور حضرت شاہ رکن عالم کے مزاروں کو بھی لائٹنگ سے سجایا گیا ہے۔ ملتان کے سب سے اونچے مقام دم دمہ سے شہر بھر کا نظارہ کرنے اور سجی قدیم عمارتوں کو دیکھنے کے لیے شہری گھروں سے نکلنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔
مسجد اللہ اکبر، مسجدالمظفر، میونسپل پبلک لائبریری اور واٹر ورکس روڈ کو بھی برقی قمقوں سے مزید حسین بنا دیا گیا ہے۔ ان مقامات کی مستقل دیکھ بھال سے یہاں سیاحت کو مزید فروغ دیا جا سکتا ہے۔

About Author

Comment here

Subscribers
Followers