بین الاقوامیقومی

برطانوی اخبار شہباز شریف کا ایک اور”کارنامہ” منظر عام پر لے آیا

برطانوی اخبار شہباز شریف کا ایک اور”کارنامہ” منظر عام پر لے آیا۔ سابق وزیراعلیٰ پنجاب نے زلزلہ متاثرین کی امداد میں لاکھوں پاؤنڈز کی خرد برد کی- برطانوی اخبار ڈیلی میل کا دعوی ہے کہ تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق ڈی-ایف-آئی-ڈی نے برطانوی لوگوں کے ٹیکس کے پیسوں سے پنجاب حکومت کو 50 کڑور پاونڈ کی امدادی رقم دی تھی جس میں شہباز شریف اور ان کے خاندان نے خورد برد کی اور پیسہ منی لانڈرنگ کے ذریعے برطانیہ بھیجا گیا ڈیلی میل کا مزید دعوی ہے کہ 2003 میں شریف خاندان کے اثاثے ڈیڑھ لاکھ پاونڈز تھے جبکہ 2018 میں ان کے اثاثے بیس کڑور پاونڈز ہیں-

برطانوی اخبار کی رپورٹ کے مطابق برطانیہ کے تحقیقاتی ذرائع کا کہنا ہے کہ انہیں یقین ہے کہ منی لانڈرنگ کے ذریعے برطانیہ منتقل کی جانیوالی رقم میں ڈی-ایف-آئی-ڈی سے لی گئی امداد کا حصہ شامل ہے۔ اخبار کا مزید کہنا تھا کے رقوم شہباز شریف کی اہلیہ، بیٹے، بیٹیوں اورداماد کہ اکاونٹس مں منتقل کی گئیں- پورے خاندان کے اکاونٹس کی تفصیلات کا جائزہ لیا جائے تو ان میں یو-اے-ای اور پاکستان سے بہت ساری مشکوک منتقلیاں پائی جاتی ہیں- چرایا گیا پیسہ برمنگھم کے بارلے اور ایچ-ایس-بی-سی بینک کے اکاونٹس میں منتقل کیا گیا جو کہ شہباز شریف اور ان کہ خاندان کے تھے- اشاعت کا مزید کہنا تھا کہ شہباز شریف کے داماد کو بھی 1 ملین پاونڈ منتقل کیا گیا جس کے دستاویزات ادارے کے پاس موجود ہیں- برطانوی حکام نے ڈی-ایف-آئی-ڈی کی جانب سے جاری کردہ 2005 سے 2012 تک تمام فنڈز کی تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے-دوسری جانب شہباز شریف کے صاحبزادے سلیمان شہباز نے اسے وزیراعظم عمران خان کی سرپرستی میں سیاسی انتقام قرار دیتے ہوئے اپنے اور اپنے خاندان پر لگائے جانے والے تمام الزامات کو مسترد کر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ان الزامات کو ثابت کرنے کے لئے شواہد موجود نہیں۔
آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم کی جانب سے نامزد کردہ احتساب کمیشن بھی شریف خاندان کی لندن میں جائیداد کی معلومات حاصل کر نے کے لیے برطانوی حکام کے ساتھ رابطے میں ہے-

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers