قومی

اینکر مرید عباس کے قتل کے معاملے میں اہم پیش رفت

اینکر مرید عباس اور خضر حیات کے قتل کا معاملہ، آپ نیوز نے ملزم عاطف کے 11 بینک اکاونٹس کھوج نکال لیے ہیں جبکہ پولیس کے ریکارڈ میں عاطف کے صرف 4 اکاونٹس کا تذکرہ ہے جبکہ واردات کا عینی شاہد اسامہ جو کہ ایک کم عمر لڑکا ہے پولیس کی تفتیش سے اوجھل ہے قتل کے وقت اسامہ بھی وہیں جائے وقوعہ پہ موجود تھا جبکہ پولیس نے اس کو تفتیش کے دائرے میں شامل نہیں کیا – پولیس تفتیش کے معاملے میں سست روی کا شکار ہے جس نے اب تک ملزم عاطف کا حتمی بیان تک ریکارڈ نہیں کیا البتہ اس کے ڈرائیور سے پولیس نے تفتیش کر لی ہے-
جبکہ آج کراچی کی جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں جب اینکر مرید عباس قتل کیس کی سماعت ہوئی تو تفتیشی افسر نے عدالت سے ملزم کے 19 جولائی تک چار روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔ تفتیشی افسر کا موقف تھا کہ ملزم عاطف کی حالت ایسی نہیں کہ اسے پیش کیا جا سکے لہٰذا ڈاکٹرز کی اجازت کے بعد ہی ملزم کوعدالت میں پیش کیا جائے گا۔ تفتیشی افسر نے عدالت کو مذید بتایا کہ ملزم عاطف زمان اٹھ بیٹھ نہیں سکتا، اس کے ریمانڈ میں توسیع کی جائے۔ عدالت نے ملزم کی صحت اور تفتیش سے متعلق رپورٹ 30 جولائی تک طلب کرتے ہوئے ملزم عاطف زمان کو 19 جولائی تک جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔
سوال یہ ہے کہ قتل کے واقعے کو کئِیں روز گزر چکے ہیں اور اب تک ملزم کراچی کے ایک مہنگے نجی ہسپتال میں زیر علاج ہے جسے کب کا سرکاری ہسپتال میں داخل کرا دیا جانا چاہیے تھا- واضح رہے کہ کراچی کے علاقے ڈیفنس میں نجی ٹی وی کے اینکر مرید عباس اور خضر حیات نامی شخص کو بزنس پارٹنر نے قتل کیا تھا جس کے بعد قاتل نے خود کو بھی گولی مارکر خودکشی کی کوشش کی تھی تاہم وہ اسپتال میں زیر علاج ہے۔دوسری جانب ملزم عاطف کے 11 بینک اکاونٹس سامنے آئے ہیں جن میں سے 5 اکاونٹس اس نے اپنی کمپنی زید انٹرپرائزز کے نام پر کھلوا رکھے تھے اور باقی اکاونٹس اس کے ذاتی تھے مگر پولیس کے ریکارڈ میں ملزم کے اب تک صرف 4 اکاونٹس ظاہر ہوئے ہیں- ایک اونچے درجے کے کیس میں دوران تفتیش اتنی سست روی پولیس کی کارکردگی پہ ایک سوالیہ نشان ہے-

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers