بین الاقوامیقومی

عالمی عدالت کلبھوشن کیس کا فیصلہ کل سنائے گی

انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس(آئی۔سی۔جے) کلبھوشن یادیو کیس میں اپنا فیصلہ کل سنائے گی- فیصلہ کل 6 بجے سنایا جائے گا جبکہ عدالت میں شرکت کرنے کے لیے اٹارنی جنرل کی قیادت میں پاکستانی ٹیم ہیگ پہنچ چکی ہے- اس کیس کا فیصلہ نئی دہلی اور اسلام آباد کے لیے بہت اہم ہو گا کیونکہ اس فیصلے کے دونوں پر بہت گہرے اثرات مرتب ہونگے- انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس(آئی۔سی۔جے)نے کلبھوشن یادیو سے متعلق کیس کا فیصلہ 21 فروری کو محفوظ کیا تھا جبکہ کیس کی آخری سماعت 18 سے 21 فروری تک ہوئی تھی-بھارتی وفد کی نمائندگی جوائنٹ سیکرٹری دیپک متل نے کی تھی جب کہ پاکستانی ٹیم کی سربراہی اٹارنی جنرل انور منصور خان کر رہے تھے۔
کلبھوشن یادیو کو پاکستانی حکام نے 3 مارچ 2016 کو بلوچستان کے قریب ساروان بارڈر سے گرفتار کیا تھا جو کہ انڈین نیوی میں اس وقت بطور افسر کام کر رہا تھآ- ملٹری کورٹ میں اپنا ٹرائل بھگتتے ہوئے کلبھوشن نے اس بات کا اعتراف کیا تھا کہ وہ پاکستان میں دہشت گردانا سرگرمیاں سرانجام دینے کے لیے آیا تھا-اقبال جرم کے بعد عدالت نے کلبھوشن کو سزائے موت سنائی تھی مگر بھارتی حکام یہ معاملہ عالمی عدالت انصاف میں لے گئے جس پرعالمی عدالت انصاف نے پاکستان کو پھانسی کے فیصلے پر عمل درآمد کرنے سے روک دیا تھا-
کیس کی نوعیت عالمی عدالت انصاف میں شروع ہی سے بہت پیچیدہ رہی ہے- بھارت کا موقف رہا ہے کہ وینا کنونشن کے تحت کلبھوشن کو پاکستان نے کونسلر رکھنے کی اجازت نہیں دی جبکہ پاکستان کا موقف رہا ہے کہ کلبھوشن ایک جاسوس ہے اور اس وجہ سے اسے کونسلر رکھنے کی اجازت دینے کا جواز نہیں بنتا- اب کل کے فیصلے میں عالمی عدالت انصاف کا اونٹ کس کروٹ بیٹھے گا اس کا سب کو انتظار ہے- آپ کو بتاتے چلیں کہ پاکستان نے انسانی ہمدردی کا جذبہ رکھتے ہوئے 25 دسمبر 2017 کو کلبھوشن یادیو کی اہلیہ اور والدہ سے ملاقات کرائی جب کہ اس ملاقات میں کلبھوشن نے والدہ اور اہلیہ کے سامنے بھی جاسوسی کا اعتراف کیا تھا-

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers