قومی

ٖلاہور میں تیز بارش لوگوں کے لیے زحمت بن گئی

لاہور سمیت پنجاب کے کئی شہروں میں بادل جم کر برسے- سب سے زیادہ بارش لاہور کے لکشمی چوک میں 98 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی- کئی نشیبی علاقے زیرآب جبکہ سڑکوں پہ پانی کھڑا ہونے سے ٹریفک کا نظام متاثر ہو گیا- محکمہ موسمیات کے مطابق بارشوں کا سلسلہ ایک ہفتے تک جاری رہے گا- لاہور میں مون سون کا پہلا مرحلہ اپنے جوبن پر ہے اور موسلادھار بارش کا سلسلہ تیسرے روز بھی جاری ہے جبکہ بالائی پنجاب، اسلام آباد، راولپنڈی، خیبر پختونخوا، کشمیر، گلگت بلتستان میں مزید بادل برسیں گے۔
لاہور میں گزشتہ رات سے بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے جس کی وجہ سے موسم تو سہانا ہو گیا لیکن انتظامیہ کی لاپرواہی کے باعث ابر رحمت لوگوں کیلئے زحمت بن گئی ہے۔ کئی اہم شاہراہیں اور سرکاری عمارتیں پانی میں ڈوبی ہوئی ہیں- لیسکو حکام کا کہنا ہے کہ بارشوں کے باعث بجلی کا نظام درہم برہم ہے اور 150 سے زائد فیڈرز کے ٹرپ کر جانے سے بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ بارش کا سلسلہ ختم ہونے کے بعد بجلی کی مکمل فراہمی شروع ہو جائے گی۔
گلبرگ میں 74، سمن آباد میں 69، ائیر پورٹ پر 52، جیل روڈ پر 58، تاج پورہ میں 33 اور اقبال ٹاؤن میں 36 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے- مسلسل بارش کے باعث شہر میں نکاس آب کا نظام بلکل معطل ہو گیا ہے- کئں سڑکیں، گلیاں، انڈرپاس تالاب کا منظر پیش کرنے لگے ہیں- پانی کھڑا ہونے کے باعث لوگوں کو دفاتر اور کاروباری مراکز تک پہنچنے میں دشواری کا سامنا ہے- کئی لوگوں کی گاڑیاں اور موٹر سائیکلیں پانی کھڑا ہونے کے باعث بیچ سڑک میں بند ہو گئی ہیں- جبکہ اندرون شہر کئی گھروں میں پانی داخل ہونے کے باعث مکینوں کو دشواری کا سامنا ہے- اس سب کے باوجود کئی منچلے نوجوانوں نے اپنی مصروفیات ترک کر کے موسم کا لطف لینے کے لیے خوبصورت مقامات اور شاہراہوں کا رخ کیا ہے- اور بہت سے لوگ اس سہانے موسم میں چائے خانوں میں چائے کا لطف لے کر اس موسم کے مزے کو دوبالا کر رہے ہیں-

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers