قومی

نیب نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کر لیا

نیب حکام نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو ایل-این-جی کیس میں گرفتار کر لیا- ن لیگ کے سینئیر رہنماء لاہور جا رہے تھے کہ ٹھوکر نیاز بیگ پہ ٹول پلازہ کے قریب انہیں نیب حکام نے اپنی حراست میں لے لیا- زرائع کے مطابق نیب حکام کے پاس ان کے وارنٹ گرفتاری موجود تھے-
سابق وزیراعظم کونیب نے راولپنڈی ٹرمینل ایل۔این۔جی کیس میں آج پیش ہونے کے لیے گزشتہ روز نوٹس جاری کیا تھا مگر انہوں نے نجی مصروفیات کے باعث پیش ہونے سے معذرت کر لی تھی- ان کا موقف تھا کہ عام طور پر نیب تین دن پہلے نوٹس جاری کرتا ہے مگر اس دفعہ انہیں ایک دن پہلے نوٹس دے کر آگاہ کیا گیا ہے لہذا وہ اتنے شارٹ نوٹس پہ نجی مصروفیات کے باعث آج پیش نہیں ہو سکتے- مگر اب نیب نے وارنٹ گرفتاری کی بنیاد پر انہیں لاہور ٹول پلازہ کے قریب گرفتار کر لیا ہے –
ن لیگی رہنماء پر الزام ہے کہ انہوں نے راولپنڈی ٹرمینل ایل۔این۔جی کا ٹھیکہ اپنی من پسند کمپنی کو دیا جس کے باعث قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان ہوا- شاہد خاقان عباسی پر بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام بھی ہے – اور زرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نے نیب کی جانب سے دیے گئے سوالنامے کے جوابات بھی جمع نہیں کروائے-
ن لیگی رہنماء کی گرفتاری پر ن لیگ کی نائب صدر مریم نواز کا کہنا ہے ہے کہ عوام کے ووٹوں سے منتخب ہونے والا شخص نیب کی ایک فوٹو کاپی کی مار ہے- جبکہ ن لیگ کے صدر شہباز شریف نے اس گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے اسے انتقامی کارروائی قرار دیا ہے –
آپ کو بتاتے چلیں کہ شاہد خاقان پر الزام ہے کہ ایل-این-جی کے 220 ارب کے ٹھیکے میں وہ خود بھی حصےدار ہیں اور ان کا نام ای-سی-ایل میں بھی شامل ہے- شاہد خاقان عباسی مسلم (ن) کے دورِ حکومت میں پہلے وزیر پیٹرولیم رہے جبکہ پاناما کیس میں میاں نوازشریف کی نااہلی کے بعد انہیں پارٹی کی جانب سے وزیراعظم پاکستان بنایا گیا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers