قومی

سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل گرفتاری سے بچ گئے

لیگی رہنماء مفتاح اسماٰعیل گرفتاری سے بچ گئے، سندھ ہائی کورٹ نے 7 روز کے لیے حفاظتی ضمانت منظور کر لی- عدالت کا ملزم کو 5 لاکھ روپے جمع کروانے کا حکم، سابق وزیر خزانہ ضمانت کے لیے صبح سویرے ہی عدالت پہنچ گئے، لیگی رہنماء نیب ٹیم سے بچنے کے لیے کمرہ عدالت میں ہی پناہ لیے رہے- مفتاح اسماعیل پر ایل-این جی ٹرمینل کیس میں رشوت لینے کا الزام ہے-
سابق وزیر خزانہ صبح جب ضمانت کے لیے عدالت پہنچے تو سندھ ہائی کورٹ نے پانچ لاکھ روپے کے مچلکے جمع کروانے کا حکم دینے کی بعد نیب تحقیقات میں تعاون کی ہدایت کر دی-سندھ ہائیکورٹ میں مفتاح اسماعیل کی درخواست پر سماعت کے بعد عدالت نے ان کی حفاظتی ضمانت منظور کرتے ہوئے انہیں 7 دن کی مہلت دے دی۔
ن-لیگی رہنماء نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ نیب کی جانب سے وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے ہیں، نیب کی کاروائی بدنیتی پر مبنی ہے لہٰذا حفاظتی ضمانت منظور کی جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ نیب کے وارنٹ گرفتاری غیر قانونی ہیں مگر نیب کی کاروائی کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہوں اور نیب حکام ہراساں کر رہے ہیں۔
سماعت سے قبل سابق وزیر خزانہ نے سندھ ہائیکورٹ میں میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چھاپے مارنے کی کوئی ضرورت نہیں تھی کیونکہ نیب نے جب بھی بلایا پیش ہوا ہوں، مجھے گزشتہ روز تین بجے کے بعد نوٹس ملا تھا۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی گرفتاری کے حوالے سے بات کرتے ہوئےانہوں نے مزید کہا کہ شاہد خاقان عباسی جیسا مخلص انسان کبھی پاکستان کو نہیں ملا-
آپ کو بتاتے چلیں کہ گزشتہ روز نیب نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے وارنٹ گرفتاری جاری ہونے کے بعد انہیں ایل این جی کیس میں ٹھوکر نیاز بیگ لاہور سے گرفتار کیا تھا۔
اس کے بعد نیب حکام نے کراچی میں رہائش پذیر سابق مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی گرفتاری کے لیے بھی ان کے گھر اور دفتر پر چھاپہ مارا تاہم وہ کہیں پر موجود نہیں تھے۔ چئیرمین نیب نے ان کے وارنٹ گرفتاری پر خود دستخط کیے تھے-

نیب نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو گرفتار کر لیا

About Author

Comment here

Subscribers
Followers