بین الاقوامیقومی

وزیراعظم عمران خان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے وائٹ ہاوس میں ملاقات کی

پاک- امریکہ تعلقات کا نیا باب شروع، وزیراعظم عمران خان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے وائٹ ہاوس میں ملاقات کی- امریکی صدر کا کہنا تھا کہ اس ملاقات کو بہت خوشگوار دیکھ رہا ہوں اور امید ہے کہ اس ملاقات سے دو طرفہ تعلقات میں بہتری آئے گی- امریکی صدر کا مسلہ کشمیر میں ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیشکش جبکہ پاکستان افغان-امریکہ میں امن کے عمل میں کردار ادا کرے گا – امریکی صدر مزید بولے کہ امریکہ پاک بھارت کشیدگی ختم کرنے میں اہم کرداد ادا کر سکتا ہے، ماضی میں پاکستان امریکہ کا احترام نہیں کرتا تھا مگر اب مدد کر رہا ہے، ایران کے ساتھ امریکہ کے تعلقات دن بدن کشیدہ ہوتے جا رہے ہیں،عمران خان پاکستان کے مقبول ترین وزیراعظم ہیں- پاکستان امریکہ سے جووعدہ کرے گا وہ نبھائے گا، وزیر اعظم عمران خان کا بیان-

وزیراعظم عمران خان وائٹ ہاؤس پہنچے تو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خود باہر آ کر ان کا استقبال کیا، دونوں رہنماؤں نے بہت گرم جوشی سے مصافحہ کیا اور اجلاس کیلئے اندر چلے گئے۔ پہلے مرحلے میں وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوئی۔

وزیراعظم عمران خان سے ملاقات میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خود مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت میں ثالثی کا کردار ادا کرنے کی پیشکش کر دی۔ بولے کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے خود ان سے کہا تھا کہ امریکا مسئلہ کشمیر کے حل میں ان کی معاونت کرے، اگر میں یہ کردار ادا کر سکوں تو مجھے ثالث بننے میں خوشی ہوگی-نہوں نے کہا کہ پاکستان کے لوگ بہت اچھے ہیں، پاکستان میں میرے کافی دوست ہیں۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ بھی کہا کہ عمران خان پاکستان کے مقبول ترین وزیراعظم ہیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مزید کہا کہ پاکستان امریکا کیلئے بہت اہمیت کا حامل ہے، پاکستان افغان عمل آگے بڑھانے میں ایک قلیدی کردار ادا کررہا ہے۔
اس تاریخی ملاقات میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے افغانستان سے متعلق پاکستان کے کردار کو سراہا۔ بولے کہ پاکستان ماضی میں امریکا کا احترام نہیں کرتا تھا لیکن اب ہماری مدد کررہا ہے، افغانستان میں اپنی فوج کی تعداد کم کررہے ہیں۔ امریکا پاکستان کے ساتھ مل کر افغان جنگ سے باہر نکلنے کی راہ تلاش کرہا ہے۔ امریکی صدر نے مزید کہا کہ افغانستان کے معاملے پر پاکستان کے پاس وہ پاور ہے جو دیگر ممالک کے پاس نہیں۔ اس موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئےعمران خان نے کہا کہ افغان تنازع کا حل صرف طالبان سے امن معاہدہ ہے، امید ہے پاکستان آنے والے دنوں میں طالبان پر مذاکرات جاری رکھنے پر زور دینے کے قابل ہو گا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران کے حوالے سے بھی گفتگو کی اور کہا کہ ایران کے ساتھ حالات کشیدہ ہو رہے ہیں مذاکرات شروع کرنا مشکل سے مشکل تر ہوتا چلا جارہا ہے۔
عمران خان کی امریکی صدر سے ملاقات سے متعلق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ ‘وزیراعظم عمران خان نیا پاکستان کا ویژن لے کر امریکا آئے ہیں، عمران خان پاک امریکا تعلقات کا نیا دور شروع کریں گے، ہم خطے میں امن اور خوشحالی کا بیانیہ لے کر امریکا آئے ہیں-

آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم عمران خان امریکی صدر کی دعوت پر تین روزہ سرکاری دورے پر امریکا میں موجود ہیں- وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ روز واشنگٹن میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کیا جب کہ اس سے قبل وزیراعظم کی تاجروں اور سرمایہ کاروں سے بھی ملاقاتیں ہوئیں۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ بھی عمران خان کے وفد کے رکن کی حیثیت سے وائٹ ہاوس میں موجود ہیں-

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers