بین الاقوامیقومی

شہباز شریف نے برطانوی اخبار کے الزامات پر قانونی شکایت کی پریس ریلیز جاری کر دی

شہباز شریف نے برطانوی اخبار کے الزامات پر قانونی شکایت کی پریس ریلیز جاری کر دی ہے- قانونی شکایت کسے لگائی گئی پریس ریلیز میں کوئی ذکر نہیں- پریس ریلیز میں لیگل نوٹس کے بجائے لیگل کمپلین کا لفظ درج کیا گیا ہے-

پریس ریلیز میں کسی لیگل نوٹس یا کسی عدالت میں قانونی کاروائی کا ذکر نہیں ہے، نامعلوم فرم کو دیے گئے اس کمپلین نوٹس کی قانونی کیا حیثیت ہے اس حوالے سے سوالات اٹھنے لگے- پریس ریلیز میں شہباز شریف نے ڈیلی میل کی جانب سے لگائے گئے الزامات کو بے بنیاد قرار دیا ہے-

لیڈر آف اپوزیشن قومی اسمبلی نے لیگل کمپلین میں مطالبہ کیا ہے کہ ان کے خلاف جو آرٹیکل چھاپا گیا ہے وہ فوری طور پر ہٹایا جائے اور اگر اخبار نے ان سے معافی نہ مانگی تو وہ لندن ہائیکورٹ جانے کا حق اپنے پاس محفوظ رکھتے ہیں۔ مزید لکھا کہ میرے خلاف چھاپے گئے آرٹیکل میں اگر کسی بھی الزام میں کوئی صداقت ہوتی یا کوئی ثبوت ہوتا تو فرد جرم لگا کر مجھے گرفتار کیا جاتا۔ آرٹیکل میں لگے الزامات کا اخبار کی جانب سے کوئی ثبوت بھی پیش نہیں کیا گیا-

لیڈر آف اپوزیشن نے مزید کہا کہ میں2005 میں زلزلے کے وقت میں برطانیہ میں جلاوطنی کی زندگی گزار رہا تھا، اپنی ساکھ، شہرت اور پیشہ ورانہ کردار بہت عزیز ہے، برطانوی عدالتوں سے اپنی بے گناہی ثابت کروں گا۔ شہباز شریف نے مزید لکھا کہ یہ سب حکومت کی ایماء پر ہو رہا ہے -برطانوی ٹیکس دہندگان کا پیسہ نا جائز طور پر استعمال کرنے کا الزام بے بنیاد اور سراسر جھوٹ ہے۔ 14 جولائی 2019 کو شائع ہونے والی خبر میں ڈیوڈ روز کی جانب سے ان پر لگائے گئے الزامات جھوٹ پر مبنی ہیں-

برطانوی اخبار کے الزامات پر ن لیگ نے قانونی کاروائی کی پریس ریلیز جاری کر دی

برطانوی اخبار کے الزامات پر ن لیگ نے قانونی کاروائی کی پریس ریلیز جاری کر دی #AapNews #BreakingNews #PressRelease #Pmln #ShahbazSharif #DailyMail

Posted by Aap News on Friday, July 26, 2019

14 جولائی کو ڈیلی میل میں شائع ہونے والے آرٹیکل میں ادارے کا دعوی تھا کہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب نے زلزلہ متاثرین کی امداد میں لاکھوں پاؤنڈز کی خرد برد کی- برطانوی اخبار ڈیلی میل کا کہنا تھا کہ تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق ڈی-ایف-آئی-ڈی نے برطانوی لوگوں کے ٹیکس کے پیسوں سے پنجاب حکومت کو 50 کڑور پاونڈ کی امدادی رقم دی تھی جس میں شہباز شریف اور ان کے خاندان نے خورد برد کی اور پیسہ منی لانڈرنگ کے ذریعے برطانیہ بھیجا گیا ڈیلی میل کا مزید دعوی تھا کہ 2003 میں شریف خاندان کے اثاثے ڈیڑھ لاکھ پاونڈز تھے جبکہ 2018 میں ان کے اثاثے بیس کڑور پاونڈز ہیں-

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers