قومی

اسحاق ڈار کی جائیداد کی ضبطگی کا عمل شروع

اسحاق ڈار کی جائیداد کی ضبطگی کا عمل شروع کر دیا گیا ہے- سابق وزیر خزانہ کا لاہور میں 4 کنال 17 مرلے کا ہجویری بنگلہ سرکاری تحویل میں لے لیا گیا ہے- بنگلہ آج ایل-ڈی-اے اور ضلعی انتظامیہ نے نیب کی ہدایت پر اپنی تحویل میں لیا ہے-

آج صبح گلبرگ میں واقع سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے ہجویری بنگلے کو جو کہ 4 کنال 17 مرلے کی اراضی پہ بنایا گیا ہے نیب کی ہدایت پر پولیس، ایل-ڈی-اے اتھارٹی اور ضلعی انتظامیہ نے ریڈ کرتے ہوئے اپنی تحویل میں لے لیا ہے- متعلقہ حکام جب ریڈ کرنے پہنچے تو گھر میں صرف چوکیدار اور چند ملازمین موجود تھے جن کو گھر سے باہر نکال کر گھر کو حکومتی تحویل میں لیتے ہوئے اس پہ سرکاری تالہ لگا دیا گیا ہے-

کچھ روز قبل نیب نے ن لیگی رہنماء حمزہ شہباز اور اسحاق ڈار کی جائیداد کی ضبطگی کا حکم دیا تھا جس پہ عملدرآمد کرتے ہوئے حمزہ شہباز کے پلاٹ بھی ضبط کیے گئے تھے اور آج اس حکم پہ پیروکار لاتے ہوئے یہ اقدام لیا گیا ہے- ذرائع کے مطابق اسحاق ڈار کے لاہور میں اور بھی تین بےنامی گھر موجود ہیں جو کہ ماڈل ٹاؤن، جوہر ٹاؤن اور بحریہ ٹاؤن میں واقع ہیں نیب جلد ان کو بھی اپنی تحول میں لینے کے لیے قانونی کاروائی شروع کرے گا-

آپ کو بتاتے چلیں کہ لیگے رہنماء اسحٰق ڈار کے خلاف آمدنی سے زائد اثاثہ جات کا ریفرنس نیب میں زیر سماعت ہے، اسحٰق ڈار کافی عرصے سے مفرور ہیں اور عدالتوں سے بچنے کے لیے بیرون ملک مقیم ہیں جس کی وجہ سے نیب نے انہیں اشتہاری قرار دیا ہے- اس سے پہلے بھی اسحٰق ڈار کے اکاؤنٹس سے 36 کروڑ روپے پنجاب حکومت کو منتقل کر دیے گئے ہیں۔ اسحٰق ڈار کے مختلف کمپنیوں کے بینک اکاؤنٹس چند ماہ پہلے منجمد کیے گئے تھے۔ اس سے قبل بھی عدالت کے حکم پر اسحٰق ڈار کی جائیداد قرق کی گئی تھی۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers