قومی

علی زیدی کی کراچی صاف کرو مہم کے سوشل میڈیا پر چرچے

کراچی کو کچرے سے پاک کرنے کا چیلنج۔ وفاقی وزیر علی زیدی کہتے ہیں کہ 14 اگست تک شہر کو صاف کر دیں گے۔ ہر شعبہ زندگی سے تعلق کھنے والے افراد علی زیدی کے ہم آواز، نجی بینک اور کمپنیوں کا بھی ان کی حمایت کا اعلان۔

اس ہفتے کراچی میں ہونے والی بارش کے سبب شہر میں ہر جگہ نکاسی آب کے مسائل پیدا ہوگئے ہیں۔ اس حوالے سے وفاقی وزیر علی زیدی نے ٹویٹ کیا تھا کہ ’’انشا اللہ اس عظیم شہر کے شہریوں کے ساتھ مل کر دو ہفتے میں ہم کراچی کا تمام کچرا صاف کر دیں گے‘‘۔

ان کی اس ٹویٹ کو ٹوئٹر اور سوشل میڈیا پر بھرپور پذیرائی حاصل ہورہی ہے اور اب تک کئی سیاست دان، ڈاکٹر، انجینئر ، فنکار اور کاروباری کمپنیوں نے ان کے ٹویٹ کو ری ٹویٹ کیا ہے اور ان کی اس مہم میں اپنی بھرپور معاونت کرنے کی بھی یقین دہانی کرائی ہے۔

اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر علی زیدی نے کہا کہ کراچی کی صفائی سے متعلق وزیر اعلیٰ سندھ سے بھی رابطہ کیا ہے۔ سیاست سے بالاتر ہو کر ہمیں مل کر کراچی کو کوڑے کرکٹ سے صاف کرنا ہے۔ کراچی کو انشااللہ 2 ہفتے میں صاف کر کے دکھائیں گے۔ کراچی والوں کو بڑی عید پر بڑی عیدی دیں گے۔ اتوار کے روز کے پی ٹی بلڈنگ سے کلین کراچی مہم کا آغاز کریں گے جبکہ 14 اگست اور عید سے پہلے شہر چمچماتا نظر آئے گا۔

اس کے علاوہ اسٹرنگز بینڈ، گلوکار فاخر محمود اور شہزاد رائے نے بھی سوشل میڈیا پر علی زیدی کی بھرپور حمایت کا اعلان کیا ہے اس کے ساتھ ساتھ غیر ملکی کرکٹر کرس جورڈن، آندرے فلیچر اور پاکستانی کرکٹر وہاب ریاض نے بھی علی زیدی کے اقدام کی تعریف کی۔ جبکہ معروف رائٹر انور مقصود نے علی زیدی کی کچھ یوں الفاظ میں سپورٹ کی کہ ایک نالہ وہ ہے جو پریشانی کے عالم میں دل سے نکلتا ہے اور دوسرا وہ جو بارش کے بعد کراچی سے نکلتا ہے۔

https://twitter.com/Faakhir_Mehmood/status/1156962526330052608

https://twitter.com/ShehzadRoy/status/1156847642716061697

کراچی میں اس ہفتے کے آغاز پر شروع ہونے والی بارش نے دو دنوں کے لیے شہر کا نظام زندگی مکمل طور پر معطل کرکے رکھ دیا تھا۔ اور ابھی بھی کئی علاقوں میں کاروبارِ زندگی جزوی طور پر معطل ہے۔ پانی کی بروقت نکاسی نہ ہونے کا ایک اہم سبب شہر کے سیوریج کے نظام کا بوسیدہ اور کچرے کے سبب ناکارہ ہوکر رہ جانا بھی ہے ، صفائی اور کچرا اٹھانے کے ناکافی اقدامات کے سبب عوام کچرے کو ندی نالوں کے سپرد کر کے بری الذمہ ہو جاتے ہیں اور یہی کچرا بارشوں میں ایسی صورتحال کا سبب بنتا ہے۔

About Author

Comment here

Subscribers
Followers