قومی

فردوس عاشق اعوان کا اپوزیشن کو کرارا جواب

معاون خصوصی فردوس عاشق کا بیان ہے کہ جمہوریت کو روبوٹ کی طرح چلانے والوں کی سیاست ختم ہو گئی ہے۔ اپوزیشن پہلے اپنی صفوں میں جمہوریت کو فروغ دے۔ راجکماری جی آنکھیں کھولیں یہ نیا پاکستان ہے۔

اپوزیشن اتحاد کی جانب سے تحریک عدم اعتماد ناکام ہونے کے بعد سینیٹرز پر کی جانے والی تنقید پر وزیراعظم کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے ٹوئٹر پر منہ توڑ جواب دیتے ہوئے کہا کہ آپ ضمیرکی آواز پر لبیک کہنے والوں کے خلاف کس منہ سے بول رہے ہیں؟ آپ توچھانگا مانگا گروپ آف انڈسٹریزچلانے والے ہیں، ذاتی اور سیاسی مفاد کے لیے آپ نے وفاق کی علامت ادارے کو بھی معاف نہیں کیا۔

انہوں نے اپوزیشن کو آڑے ہاتھوں لیا اور ان کی تحریک عدم اعتماد کی ناکامی پر ان کی سیاست کو دفن قرار دے دیا۔ کہا کہ جمہوریت کو روبوٹ کی طرح چلانے والوں کی سیاست اب ختم ہو گئی ہے۔ جمہوریت پہ بات کرنے والے پہلے اپنی جماعتوں میں جمہوریت کو فروغ دیں۔

انہوں نے بنا نام لیے مریم نواز کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ راجکماری جی ہوش میں آئیے یہ نیا پاکستان ہے یہاں لوگ ضمیر کے مطابق فیصلے کرتے ہیں۔ 2013 میں ظل سبحانی نے الیکشن نتائج سے پہلے ہی اعلان کیا تھا۔ ظل سبحانی نے جو دھاندلی کی تھی وہ راجکماری کیوں بھول گئیں؟۔ انہوں نے مزید کہا کہ معزز سینیٹرز کو دھمکیاں دینا انتہائی قابل مذمت ہے، اپنی مرضی سے ووٹ دینا ہی اصل جمہوریت ہے.

آپ کو بتاتے چلیں کہ گزشتہ روز سینیٹ کے اجلاس میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے خلاف اپوزیشن کی جانب سے پیش کی گئی تحریک عدم اعتماد ناکام ہو گئی تھی. جس کے ساتھ ہی وہ چیئرمین سینیٹ کے عہدے پر برقرار رہے۔ جب ن لیگ کے رہنماء راجہ ظفرالحق نے ایوان میں تحریک پیش کی تو اپوزیشن کے 63 ارکان نے اپنی نشستوں پہ کھڑے ہو کر اس کی حمایت کی تاہم جب خفیہ رائے شماری کی باری آئی تو اپوزیشن کے امیدوار کو 53 کے بجائے 50 ووٹ ملے۔ اپوزیشن نے میر حاصل بزنجو کو اپنا متفقہ امیدوار نامزد کیا تھا۔ اپوزیشن کے لوگوں نے اس نتیجے پر کافی غم و غصے کا اظہار بھی کیا تھا۔

About Author

Comment here

Subscribers
Followers