بین الاقوامی

بھارتی فوج کا لائن آف کنٹرول پہ کلسٹر ایمونیشن کا استعمال

بھارت جنگی جنون میں پاگل ہو گیا۔ بھارتی فوج لائن آف کنٹرول کے قریب واقع پاکستانی شہریوں پر کلسٹر بم پھینکنے لگی۔ آئی۔ایس۔پی۔آر کے مطابق 30 اور31 جولائی کی رات کو بھارتی فوج نے نیلم ویلی کے قریب لائن آف کنٹرول پہ کلسٹر بم کی شیلنگ کی ہے۔ شہری آبادی پر کلسٹر بموں کا استعمال جنیوا کنونشن اور بین الاقوامی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ عالمی برادری نوٹس لے۔

پاک فوج کے ترجمان کے مطابق بھارتی فوج درندگی پر اتر آئی اور ایل او سی کے قریب شہری آبادی کو کلسٹر ایمونیشن کے ذریعے نشانہ بنانے لگی۔ کلسٹر ایمونیشن کا استعمال جنیوا کنونشن اور بین الاقوامی انسانی حقوق کی واضح خلاف ورزی ہے۔ 30 اور 31 کی رات کو کلسٹر ایمونیشن کا استعمال کیا گیا۔ جس کے شواہد موجود ہیں۔ آئی۔ ایس۔پی۔آر نے تصاویر جاری کر دیں۔ جس میں واضح طور پر بچوں، خواتین اور دیگر لوگوں کو زخمی حالت میں دیکھا جا سکتا ہے۔ بھارتی فوج کی جانب سے اس اشتعال انگیزی کی وجہ سے 4 سالہ بچے سمیت 11 شہری بھی شدید زخمی ہوئے ہیں۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے یہ بھی کہنا تھا کہ کلسٹر ایمونیشن کے تحت اس طرح کے بموں کا استعمال ممنوع ہے۔ لیکن جنگی جنون میں مبتلا بھارت کھلم کھلا اس طرح کے ایمونیشن کا استعمال کر رہا ہے۔ اس پر عالمی برادری نوٹس لے۔ بھارت نے رواں سال 1824 مرتبہ جنگ بندی معاہدے 2003 کی خلاف ورزی کی ہے۔ جس کی وجہ سے وطن عزیز کے 16 افراد جاں بحق جبکہ 105 زخمی ہو چکے ہیں۔ پاک فوج کی جانب سے ہر بھارتی اشتعال انگیزی کا منہ توڑ جواب دیا جاتا ہے۔ بھارتی فوج اپنی کم ظریفی کا اظہار کرتے ہوئے نہتے شہرویوں کو نشانہ بناتی ہے۔ جبکہ پاک فوج کا ہدف جوابی کارروائی میں ان کی چوکیاں ہوتا ہے۔

پاک فوج کی جانب سے اس منہ توڑ جواب کے نتیجے میں بھارتی فوج کی کئی چوکیاں تباہ جبکہ کئی فوجی جاں بحق بھی ہوئے ہیں۔ 30 اور 31 جولائی کی رات کو زخمی ہونے والے پاکستانی شہریوں کو بروقت کارروائی کرتے ہوئے پاک فوج نے ہسپتال منتقل کر دیا ہے۔ جبکہ نیلم ویلی کے پورے علاقے میں سرچ آپریشن کر کے اسے ہر طرح کے ایمونیشن سے کلیٔر کر دیا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers