بین الاقوامی

بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں ہائی الرٹ جاری

بھارت کی مقبوضہ کشمیر میں بڑے آپریشن کی تیاری۔ غیر اعلانیہ ایمرجنسی نافذ۔ سوپور میں تازہ کارروائی میں نوجوان شہید۔ آئی ٹی یونیورسٹی سے بھارتی طلبہ کو واپس جانے کی ہدایت۔ امرناتھ یاتریوں کو نکالنے کے لیے بھی اضافی پروازیں چلائی جائیں گی۔ کشمیر انڈر تھریٹ ٹوئٹر پہ ٹاپ ٹرینڈ بن گیا۔ جبکہ مقبوضہ کشمیر کی سابق وزیر اعلی اپنے گھر میں قید۔

مودی سرکار نے وادی میں خوف و حراس کی فضا قائم کر دی۔ ایک حکم نامے میں امرناتھ یاترا کے لیے آئے یاتریوں اور سیاحوں کو فوراً وادی چھوڑنے کا حکم دے دیا گیا۔ جبکہ 28 ہزار اضافی بھارتی فوج تعینات کر دی گئی۔ بھارتی پولیس نے غیر ملکی چینل کو بتایا کہ انہیں امن و امان کی غیر معمولی صورتحال کے لیے فوری تیار رہنے کا حکم دیا گیا ہے۔

پچھلے کئی ماہ سے بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 35 اے اور آرٹیکل 370 کے خاتمے کی باتیں کی جا رہی ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں آرٹیکل 35 اے اور آرٹیکل 370 کے خاتمے کے حوالے سے بھارت کی حکمران جماعت بی جے پی کے کئی رہنماء اپنے بیانات بھی نشر کر چکے ہیں۔
حریت رہنما میر واعظ عمر فاروق کا کہنا ہے کہ گزشتہ ایک ہفتے سے وادی میں خوف و حراس کی فضا قائم ہے۔ محبوبہ مفتی کے مطابق وادی میں بڑی کارروائی ہونے جا رہی ہے۔ ادھر بھارتی فوج نے سرچ آپریشن کی آڑ میں بارہمولہ کے علاقے میں ایک کشمیری نوجوان کو شہید کر دیا۔

بھارت کی جانب سے کشمیر سے سیاحوں اور ہندو زائرین کو فوری طور پر مقبوضہ وادی چھوڑنے کی ہدایت نے کشمیری عوام کی بے چینی میں مزید اضافہ کر دیا ہے۔ صورتحال خراب ہونے کے خدشے کی وجہ سے مقامی افراد نے خوراک ادویات اور فیول کا ذخیرہ کرنا شروع کر دیا۔ مقبوضہ وادی میں تعینات بھارتی فوج نے ہفتے کے روز بھی سرچ آپریشن کی آڑ میں دو نہتے نوجوانوں کو شہید کر دیا ہے۔

بھارتی اپوزیشن جماعت کانگریس کا کہنا ہے کہ کشمیر میں فوج بڑھانے، یاتریوں اور سیاحوں کو روکنے سے مقامی لوگوں میں خوف بڑھا ہے۔ کانگریس نے مودی سرکار کو خبردار کیا ہے کہ آرٹیکل 35 اے اور 370 ختم کرنے کا منصوبہ انتہائی خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers