قومی

وزیراعظم عمران خان نے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس آج طلب کر لیا

وزیراعظم عمران خان نے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس آج طلب کر لیا۔ مسلح افواج کے سربراہان، انٹیلی جنس حکام اور سول قیادت شریک ہوگی۔ مقبوضہ کشمیرپر بھارتی جارحیت اور کلسٹر بم کے استعمال کے بعد صورتحال پر غور کیا جائے گا۔

وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اتوار کے روز قومی سلامتی کمیٹی کا اہم اجلاس طلب کر لیا ہے۔ جس میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر دفاع پرویز خٹک اور مسلح افواج کے سربراہان اور انٹیلی جنس حکام سمیت دیگر اہم شخصیات شرکت کریں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں کنٹرول لائن پر بھارت کی جانب سے کلسٹر بموں کے استعمال سے پیدا ہونے والی صورتحال پر غور کیا جائے گا اس کے علاوہ مقبوضہ کشمیر میں تازہ بھارتی کارروائیوں سے خطے پر پڑنے والے اثرات کا جائزہ بھی لیا جائے گا۔

اس کے علاوہ ان کا مزید کہنا تھا کہ سیاسی قیادت ذاتی مفادات سے بالاتر ہو کر قومی معاملات پر اتحاد و اتفاق اور یکجہتی کا پیغام دے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشت گردی اور لائن آف کنٹرول پہ کشیدگی کی صورت حال پر تمام سیاسی قیادت کو ایک زبان ہو کر بھارتی دہشت گردی کو پوری دنیا کے سامنے بے نقاب کرنا چاہیے۔

بھارت کی جانب سے ایل او سی کے قریب شہری آبادی کو کلسٹر ایمونیشن کے ذریعے نشانہ بنایا گیا تھا۔ کلسٹر ایمونیشن کا استعمال جنیوا کنونشن اور بین الاقوامی انسانی حقوق کی واضح خلاف ورزی ہے۔ 30 اور 31 کی رات کو کلسٹر ایمونیشن کا استعمال کیا گیا جس کے شواہد موجود ہیں۔

دوسری جانب مودی سرکار نے وادی کشمیر میں خوف و حراس کی فضا قائم کر دی۔ ایک حکم نامے میں امرناتھ یاترا کے لیے آئے یاتریوں اور سیاحوں کو فوراً وادی چھوڑنے کا حکم دے دیا گیا۔ جبکہ 28 ہزار اضافی بھارتی فوج تعینات کر دی گئی۔ بھارتی پولیس نے غیر ملکی چینل کو بتایا کہ انہیں امن و امان کی غیر معمولی صورتحال کے لیے فوری تیار رہنے کا حکم دیا گیا ہے۔

About Author

Comment here

Subscribers
Followers