قومی

نیب نے مریم نواز کو حراست میں لے لیا

نیب کی ایک اور بڑی کارروائی، چوہدری شوگر ملز کیس میں پیش نہ ہونے پر مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کو حراست میں لے لیا گیا۔ نواز شریف کے بھتیجے یوسف عباس بھی گرفتار۔

مریم نواز اپنے والد اور سابق وزیراعظم نواز شریف سے ملاقات کے لیے کوٹ لکھپت پہنچیں تھیں۔ جہاں سے نیب حکام نے انہیں اپنی حراست میں لیا۔نیب کی ٹیم چار گاڑیوں کے ساتھ دو راستوں سے پہنچی تھی۔ ایک راستے سے لیڈیز پولیس اہلکار اور دوسرے سے مرد پولیس حکام جیل پہنچے۔ نیب اہلکار مریم نواز کو لے کر روانہ ہوگئے جبکہ مریم نواز کے سیکورٹی اہلکاروں کو واپس بھیج دیا گیا۔ دوسری جانب نوازشریف کے بھتیجے عباس شریف کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔

نیب ٹیم مریم نواز کو کل احتساب عدالت پیش کر کے ان کے ریمانڈ کی استدعا کرے گی۔ نیب ذرائع کے مطابق مریم نواز شوگر ملز کیس میں غیر ملکی سرمایہ کاری کا ریکارڈ پیش کرنے میں ناکام رہیں ہیں۔ ان کے نام 3 غیر ملکیوں نے 11 ہزار شئیرز ٹرانسفر کئے تھے۔ مریم ان کے ذرائع آمدن بتانے سے بھی گریزاں رہیں۔

دوسری جانب پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول زرداری نے قومی اسمبلی اجلاس میں اظہار خیال کیا اور بتایا کہ ابھی خبر دیکھی کہ مریم نواز کو نیب نے گرفتار کرلیا۔ اس موقع پر اسمبلی میں اپوزیشن ارکان نے شیم شیم کے نعرے لگانا شروع کردئیے۔
مریم نواز کو ان کے اپنے ہی گھر میں نظربند کیا جائے گا یا کہیں اور رکھا جائے گا، اس بات کا فیصلہ نیب آفس میں کچھ دیر میں ہو گا۔ مریم نواز کی گرفتاری پر ن لیگی کارکنان نے لاہور اور اسلام آباد میں احتجاج شروع کر دیا تاہم پولیس نے صورتحال کنٹرول کر لی۔ اس کے علاوہ نیب ٹیم نے مریم نواز کی گرفتاری سے چیئرمین نیب کو بھی آگاہ کردیا ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ 31 جولائی کو ن لیگی رہنماء مریم نواز چوہدری شوگر ملز کیس میں نیب کے سامنے پیش ہوئیں تھیں۔ نیب حکام نے مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر کو چوہدری شوگر ملز کیس میں طلب کر رکھا تھا اور وہ بدھ کی صبح نیب لاہور کے دفتر میں خاضر ہوئیں جہاں نیب کی ٹیم نے تقریباً 40 منٹ تک ان سے تفتیش کی تھی۔ نیب نے اس روز ان کے بھائیوں حسن نواز، حسین نواز اور عباس شریف کے بیٹے عبدالعریز کو بھی طلب کر رکھا تھا اور طلب کیے گئے تمام افراد چوہدری شوگر ملزم میں شیئر ہولڈرز ہیں۔ حسن اورحسین نواز بیرون ملک ہونے کے باعث پیش نہیں ہوئے تھے۔

نیب کی ٹیم  نے مریم نواز سے شیئرز کی خرید و فروخت سے متعلق سوالات کئے تھے۔ ذرائع کے مطابق نیب کی جانب سے پو چھا گیا کہ چوہدری شوگر ملز میں شیئرز کی خرید و فروخت کیسے ہوئی ؟ مریم نواز نیب ٹیم کو اپنے جوابات سے مطمئن نہ کر سکیں تھیں۔ نیب نے مریم نواز کو سوالنامہ دیتے ہوئے 8 اگست کو دوبارہ طلب کیا تھا جبکہ ریکارڈ بھی ساتھ لانے کی ہدایت کی تھی-

About Author

Comment here

Subscribers
Followers