بین الاقوامیقومی

دفتر خارجہ نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو طلب کر لیا

بھارت سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی بند کرے۔ پاکستان کی بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کی دفتر خارجہ طلبی کر کے احتجاج۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت شہری آبادی کو بھاری اسلحے سے نشانہ بنا رہا ہے۔ یہ بین الااقوامی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ احتجاجی مراسلہ بھی تھما دیا گیا۔

پاکستان نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر گورو آہلو والیا کو دفتر خارجہ طلب کیا اور ایل اوسی کے تتہ پانی سیکٹر پر بھارتی فورسز کی بلااشتعال فائرنگ پر شدید احتجاج کیا۔

بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر گورواہلوالیہ کو ڈی جی ساؤتھ ایشیا کی جانب سے احتجاجی مراسلہ بھی تھمایا گیا اور پاکستان کی جانب سے بھارتی فوج کی طرف سے جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی شدید الفاظ میں مذمت بھی کی گئی۔

دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ گزشتہ روز لائن آف کنٹرول کے تتہ پانی سیکٹر پر بھارتی فوج کی بلااشتعال گولہ باری اور فائرنگ سے 2 شہری شہید اور ایک بچہ زخمی ہوا ہے۔ شہدا میں75 سال کے لعل محمد اور 61سال کے حسن دین شامل ہیں۔

مزید کہا کہ بھارتی فوج ایل او سی اور ورکنگ باؤنڈری پر شہری آبادی کو نشانہ بنا رہی ہے۔ دو ہزار سترہ سے اب تک انیس سو ستر مرتبہ سیزفائرلائن کی خلاف ورزی کی گئی۔

اس کے علاوہ کہا گیا کہ بھارت مسلسل جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرتا آ رہا ہے۔ جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی سے علاقائی امن کو خطرہ لاحق ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ 4 روز پہلے بھی پاکستان نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو دفترخارجہ طلب کیا تھا اور ایل او سی کی خلاف ورزیوں پرشدید احتجاج کیا۔ دفتر خارجہ نے کہا تھا کہ بھارت کی جانب سے لیپا اور بٹل سیکٹرمیں بلا اشتعال فائرنگ کی گئی ہے۔ فائرنگ سے نائیک تنویر،لانس نائیک تیمور، سپاہی رمضان شہید ہوئے تھے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers