قومی

شہید راشد منہاس کا 48واں یوم شہادت

وطن پر جان نچھاور کرنے والے بہادر سپوت راشد منہاس کو قوم کا سلام۔ آج 48واں یوم شہادت منایا جا رہا ہے۔ راشد منہاس نے اپنی جان دے کر پاک فضائیہ کا طیارہ بھارت لے جانے کی کوشش ناکام بنا دی۔ اعلی ترین اعزاز نشان حیدر پایا۔

پاک فضائیہ کے نوجوان آفیسر پائلٹ راشد منہاس 17 فروری 1951 کو کراچی میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے جامعہ کراچی سے ملٹری ہسٹری اینڈ ایوی ایشن ہسٹری میں ماسٹرز کیا۔ راشد منہاس کے والد سول انجینیٔر ہونے باعث کنسٹرکشن کے شعبے سے وابستہ تھے اور ان کی خواہش تھی کہ ان کا بیٹا بھی انہیں کے شعبے میں اپنا نام کمائے مگر ایوی ایشن اور وطن سے محبت کے جنون میں اپنے والد کی خواہش کے خلاف جا کر انہوں نے 1968 میں پی۔ای۔ایف سکول لوئر ٹوپہ میں داخلہ لیا۔

اپنی ٹیننگ مکمل کر کے انہوں نے 13 مارچ 1971 کو پاک فضائیہ میں بطور کمیشنڈ جی ڈی پائلٹ شمولیت اختیار کی۔ راشد منہاس شہید ابتدا ہی سے ایوی ایشن کی تاریخ اور ٹیکنالوجی سے متاثر تھے، ان کو مختلف طیاروں اور جنگی جہازوں کے ماڈلز جمع کرنے کا بھی شوق تھا۔

راشد منہاس 20 اگست کو اپنی تیسری تنہا پرواز پر نکلے۔ ٹرینر جیٹ طیارے پر جیسے ہی سوار ہوئے ان کا انسٹرکٹر سیفٹی فلائٹ آفیسر بنگالی مطیع الرحمان اشارہ دے کر کاک پٹ میں گھسا اور ان کے ساتھ پرواز پر چل دیا۔

دوران پرواز انسٹرکٹر نے جہاز کا کنٹرول حاصل کرنے کی کوشش کی تو راشد منہاس نے فوری طور کنٹرول روم کو پیغام بھیجا کہ ان کا جہاز ہائی جیک کر لیا گیا ہے جس پر کنٹرول ٹاور سے ہدایت ملی کہ طیارہ ہر قیمت پر اغوا سے بچانا ہے۔ دشمن نے ان کے سر پر وار کرتے ہوئے بے ہوش کر دیا اور جہاز کا رخ انڈیا کی طرف موڑ دیا۔

جہاز انڈیا سے 40 میل کے فاصلے پر ہی تھا کہ راشد منہاس نے ہوش سنبھالتے ہی مزاخمت کی۔ دشمن اپنے ناماک عزائم میں کامیاب نہ ہو سکے اس لیے انہوں جہاز کا رخ زمین کی طرف موڑ دیا۔ اور اس دشمن کے عزائم کو خاک میں ملاتے ہوئے جام شہادت نوش کیا۔
راشد منہاس شہید نے اپنی جان قربان کرکے ملک کے دفاع اور حرمت کی لاج رکھ لی۔ ان کی بے مثال قربانی پر حکومت پاکستان نے انھیں اعلیٰ ترین فوجی اعزاز نشانِ حیدر سے نوازا گیا۔ وہ نشان حیدر پانے والے سب سے کم عمر شہید ہیں۔ ان کو کراچی کے فوجی قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا۔

وطن کے اس جانباز سپوت کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے اٹک میں قائم کامرہ ایئر بیس کو راشد منہاس شہید کے نام سے منسوب کیا گیا۔ قوم کوعظیم سپوت کی قربانی اور کارنامے پر ہمیشہ فخر رہے گا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers