قومیٹیکنالوجی

پاکستان نے فائیو جی (5G) کا کامیاب تجربہ کر لیا

ٹیکنالوجی کے میدان میں پاکستان ایک قدم آگے۔ پاکستان فائیو جی (5G) سروس کا تجربہ کرنے والا خطے کا پہلا ملک بن گیا۔ ٹیلی کام حکام کے مطابق سروس کا آغاز جلد کر دیا جائے گا۔

پاکستان میں ٹیلی کمیونی کیشن کے میدان سے بڑی خبر سامنے آ گئی۔ چینی تعاون سے منصوب ٹیلی کام کمپنی نے پاکستان میں فائیو جی (5G) کا کامیاب تجربہ کر لیا ہے۔ جس کے بعد پاکستان اب فائیو جی کا تجربہ کرنے والے چند ممالک میں شامل ہو گیا ہے۔

یہ سنگ میل عبور کرنے کے بعد پاکستان ساؤتھ ایسٹ ایشیا میں فائیوجی ٹیکنالوجی کا کامیاب تجربہ کرنے والا پہلا ملک بن گیا ہے۔ چیئرمین پی ٹی اے، وفاقی وزیر آئی ٹی اور کمپنی آج تفصیلات میڈیا کو بریفینگ میں دیں گے ۔

ٹیلی کام کمپنی حکام کے مطابق پاکستان میں جلد ہی فائیو جی (5G) سروس شروع کر دی جائے گی۔ فائیو جی نیٹ ورک موجودہ موبائل انٹرنیٹ کنکشن سے سو (100) گنا تیز ہو گا۔ جس کے ذریعے صارفین محض ایک سیکنڈ میں کئی میگا بائیٹ ڈاؤن لوڈ کر سکیں گے۔ اس کے علاوہ یہ فائیو جی (5G) نیٹ ورک موجودہ براڈ بینڈ کنکشن سے بھی دس گنا تیز ہو گا۔

فائیو جی (5G) کی خصوصیت یہ ہو گی کہ فائیو جی سے 50 جی بی کی فائل 2 منٹ میں ڈاون لوڈ ہو سکے گی۔ ذرائع کے مطابق نیٹ ورک کی سپیڈ کا دارومدار آپریٹر کے پاس موجود سپیکٹرم پر ہو گا۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) حکام کا کہنا تھا کہ فائیو جی (5G) کے لائسنسز کا اجرا رواں سال نومبر میں ہو گا۔ درخواستیں وصول کرنے کیلئے اخبار میں اشتہار دے دیا گیا ہے جبکہ اس کا طریقہ کار بھی ویب سائٹ پر موجود ہے۔ اب تک چار کروڑ 40 لاکھ افراد تھری جی (3G) اور فور جی (4G) کی سروس استعمال کر رہے ہیں۔ فائیو جی (5G) لائسنس کیلئے مختلف ٹیلی کام سیکٹر کی کمپنیاں خواہش مند ہیں۔

اس سے پہلے 2014 میں بھی تھری جی (3G) اور فور جی (4G) کے لائسنس کا اجرا کیا گیا تھا جس کے بعد بڑی تعداد میں صارفین نے اس کا استعمال شروع کر دیا تھا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers