قومی

اسلام آباد میں شہید پولیس اہلکاروں کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی

اسلام آباد میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے شہید پولیس اہلکاروں کی نماز جنازہ لائن ہیڈ کواٹرز میں ادا کر دی گئی۔ وزیر داخلہ آئی جی اسلام آباد نماز جنازہ میں شریک ہوئے۔ شہداء کے بچوں کے لیے مفت تعلیم, 60 سال تک مکمل تنخواہ اور تمام سہولیات دینے کا اعلان کیا گیا۔

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں ناکے پر فائرنگ سے شہید ہونے والے 2 پولیس اہلکاروں کی نماز جنازہ ادا کرکے میتیں کواحقین کے حوالے کر دی گئیں۔

پولیس کے شہید اہلکاروں کی نمازہ جنازہ پولیس لائن ہیڈ کوارٹرز میں ادا کی گئی جس میں وزیرداخلہ اعجاز شاہ، آئی جی اسلام آباد اور دیگر افسران اور اہلکاروں شرکت کی۔

گزشتہ روز اسلام آباد میں تھانا سبزی منڈی کے علاقے آئی جے پی روڈ پر نامعلوم افراد کی پولیس ناکے پر فائرنگ سے دو پولیس اہلکار شہید اور ایک زخمی ہو گیا تھا۔ فائرنگ سے ایک اہلکار جائے وقوعہ پہ ہی دم توڑ گیا تھا۔ جبکہ دوسرا اہلکار ہسپتال جاتے ہوئے چل بسا۔ شہید ہونے والے پولیس جوانوں کے نام ثقلین اور خرم تھے۔ جبکہ زخمی اہلکار کا نام جہانزیب ہے۔

ڈی آئی جی آپریشنز وقار الدین سید نے واقعہ کو دہشت گردی قرار دیتے ہوئے بیان دیا کہ فائرنگ کرنے والے ایک ملزم نے شلوار قمیض پہن رکھی تھی۔ جس کی عمر تقریبا 24 سے 30 سال کے درمیان تھی اور قد درمیانہ تھا۔ تحقیقات کیلئے دو ٹیمیں تشکیل دے دی ہیں۔ بہت جلد قاتلوں تک پہنچ جائیں گے۔
فائرنگ کا مقدمہ تھانہ سی ٹی ایف میں درج کر لیا گیا ہے۔ جس میں دہشت گردی، قتل اور اقدام قتل کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔ زخمی ہوئے کانسٹیبل جہانزیب نے بتایا تھا کہ وہ 3 جوان معمول کی ڈیوٹی پر موجود تھے کہ 2 افراد سروس روڈ کیرج فیکٹری کی طرف سے آئے اور انہوں نے ہمارے نزدیک پہنچ کر اچانک فائرنگ کر دی۔

نماز جنازہ کے موقع پر شہداءکے اہل خانہ کے لیے 60 سال تک مکمل تنخواہ اور تمام سہولتیں اور بچوں کو مفت تعلیم دینے کا اعلان بھی کیا گیا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers