بین الاقوامی

بھارت سے بہت بات کر لی اب مذاکرات کا فائدہ نہیں: وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم عمران خان کا مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کے خدشے کا اظہار۔ امریکی اخبار کو انٹرویو میں کہا کہ بھارت سے بہت بات کر لی اب مذاکرات کا فائدہ نہیں۔ دو ایٹمی قوتیں آمنے سامنے ہیں کچھ بھی ہو سکتا ہے۔ بھارت جنگ کے بہانے ڈھونڈے گا۔ صدر ٹرمپ کو تباہ کن صورتحال سے آگاہ کر دیا ہے۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان مذہبی تشدد کا شکار افراد کے عالمی دن پر کشمیریوں کے حق میں بول پڑے۔ کہا کہ کشمیری بنیادی حقوق اور آزادی سے محروم ہیں۔ عالمی بردری بھارت کو متوقع نسل کشی سے روکے۔

وزیراعظم عمران خان نے امریکی اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ بھارت سے مذاکرات کی بہت کوشش کی تھی لیکن اب مذاکرات کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔ بھارت نے پاکستان کی امن مذاکرات کی پیشکش کو کمزوری سمجھا ہے۔ دونوں جوہری ہمسایہ ممالک کے درمیان جنگ کے خطرات بڑھ رہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ انہیں خدشہ ہے کہ یہ کشیدگی اور بڑھے گی اور دوایٹمی طاقتوں کے درمیان یہ تناؤ دنیا کے لیے بھی باعث فکر ہونا چاہیے۔ خطے میں کشیدگی بڑھنے کا امکان ہے اور کچھ بھی ہوسکتا ہے اس لیے امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کو انتہائی تباہ کن صورتحال کے آثار سے آگاہ کردیا ہے۔

پاکستان کے خلاف جنگ کے بہانے ڈھونڈے گا۔ اگرحملہ ہوا تو پاکستان بھارت کو بھرپورجواب دینے پرمجبور ہوگا۔ کشمیریوں کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ 80 لاکھ کشمیریوں کی جانیں خطرے میں پڑ گئی ہیں۔ خدشہ ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی ہونے والی ہے۔ نئی دلی کی حکومت بالکل نازی جرمنی جیسی ہے۔

بھارتی وزیراعظم کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ مودی ایک فاشسٹ اور ہندو بالادستی پر یقین رکھنے والے حکمران ہیں جو کشمیر میں مسلم اکثریت کو ختم کر کے خطے میں ہندو آبادی کو آباد کرنا چاہتے ہیں۔

دوسری جانب سماجی رابطے کی ویبسائٹ ٹوئٹر پر عمران خان نے کشمیریوں کے جذبات کی عکاسی کرتے ہوئے کہا کہ آج مذہبی تشدد کے شکار افراد کا پہلا عالمی دن ہے۔

آج کے دن ہم دنیا کی توجہ بھارت کے ظلم و بربریت میں گھرے لاکھوں کشمیریوں کی جانب مرکوز کروانا چاہتے ہیں۔ جنہیں انتشار و تشدد کا سامنا ہے اور انہیں بنیادی حقوق اورآزادی سے محروم رکھا گیا ہے۔

بھارت نے مقبوضہ جموں و کشمیر پر ناجائز قبضہ جمایا ہوا ہے۔ اس عید الاضحی پر کشمیریوں کو نماز پڑھنے کی اجازت بھی نہیں دی گئی۔ کیونکہ آج دنیا مذہبی بنیاد پر تشدد کا شکار افراد سے اظہار یکجہتی کر رہی ہے۔ اس لیے آج کے دن ضروری ہے کہ دنیا کشمیریوں کی نسل کشی کیخلاف ٹھوس لائحہ عمل دے۔

وزیراعظم عمران خان نے مزید مطالبہ بھی کیا کہ دنیا مقبوضہ کشمیر میں متوقع نسل کشی کو روکنے کے لیے کردار ادا کرے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers