بین الاقوامی

راہول گاندھی کو سری نگر ائیرپورٹ سے واپس دہلی بھیج دیا گیا

ہٹلر مودی کی مقبوضہ کشمیر میں اپنے کرتوت چھپانے کی بھونڈی کوشش۔ اپنے ہی ملک کی اپوزیشن کو وادی کا دورہ کرنے کی اجازت نہ دی۔ راہول گاندھی سمیت 9 رکنی وفد کو سری نگر ائیرپورٹ سے نکلنے نہ دیا۔ کچھ دیر محصور رکھنے کے بعد واپس دہلی بھجوا دیا گیا۔ میڈیا کو بھی الگ کر دیا گیا۔

بھارتی اپوزیشن پارٹی کانگریس کے رہنما راہول گاندھی، اپوزیشن لیڈرغلام نبی آزاد سمیت دیگر اپوزیشن رہنماؤں کے ساتھ حالات کا جائزہ لینے سری نگر پہنچے۔ بھارتی قابض انتظامیہ نے انھیں ایئرپورٹ سے نکلنے ہی نہیں دیا اور کچھ دیر محصور رکھنے کے بعد جبراً واپس بھیج دیا۔

انتظامیہ کا مؤقف تھا کہ اپوزیشن رہنماؤں کا دورہ قانون کی خلاف ورزی ہے اور اس سے صورتحال خراب ہو سکتی ہے۔ راہول گاندہی کا طیارہ لینڈ کرتے ہی سری نگر ائیرپورٹ پر ایمرجنسی نافذ کر دی گئی۔

بھارتی اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد کا کہنا تھا کہ اگر کشمیر میں سب اچھا ہے تو انہیں اجازت کیوں نہیں دی گئی۔ اس کے علاوہ بھارتی فوج نے راہول گاندھی کی کوریج کے لیے پہنچنے والے بھارتی میڈیا کو بھی ان سے الگ کر کے ان کو کوریج سے روک دیا۔
بھارتی کانگریس کے رہنماؤں نے مقبوضہ کشمیر میں گرفتار سياسی رہنماؤں سے ملاقاتيں اور کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کرنے کے لیے سری نگر کے دورے کا اعلان کیا تھا۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ 5 اگست کو راجیہ سبھا میں کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا بل پیش کرنے سے پہلے ہی صدارتی حکم نامے کے ذریعے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی تھی اور ساتھ ساتھ مقبوضہ کشمیر کو اپنی وفاقی حکومت کے زیرِ انتظام دو حصوں میں تقسیم کردیا تھا۔

اس اقدام کی بھرپور مخالفت کرتے ہوئے اپوزیشن جماعت کانگریس نے حکومت سے آرٹیکل 370 بحال کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ لیکن اس کے بجائے راجیہ سبھا میں بل کے حق میں 125 جبکہ مخالفت میں 61 ووٹ آئے تھے۔ بھارت نے 6 اگست کو لوک سبھا سے بھی دونوں بل بھاری اکثریت کے ساتھ منظور کرالیے تھے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers