قومی

مصطفٰی کمال نے 3 ماہ میں کراچی صاف کرنے کا چیلینج قبول کرلیا

پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفٰی کمال نے 3 ماہ میں کراچی صاف کرنے کا چیلینج قبول کرلیا۔ بولے کہ جو کہتا ہے کہ شہر صاف نہیں ہو سکتا وہ کرپٹ اور نااہل ہے۔ میئر کراچی اور دیگر حکام کو بھاگنے نہ دیا جائے۔ ان کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے۔

کراچی میں پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین مصطفیٰ کمال نے کہا کہ شہر قائد کا کچرا اٹھانے اور مشینری کی ذمے داری میئراورضلع میں تعینات انتظامیہ کی ہے۔ چاروں ضلعوں میں صفائی کی ذمےداری انہوں نے لے رکھی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کے لیے 5 گاربیج ٹرانسفر اسٹیشن فوری طور پر قائم کیے جائیں۔ گاربیج ٹرانسفر اسٹیشن کے لیے وفاقی حکومت فنڈز مہیا کرے۔ کچرے کے کلیکشن پوائنٹس بنانے سے کچرا ری سائیکل بھی ہوسکے گا۔ حکومت سندھ سالڈ ویسٹ منیجمنٹ ختم کر کے سالڈ ویسٹ منیجمنٹ کے تمام اختیارات یونین کونسل کی سطح پر چیئرمین کو دے۔ بورڈ کو ختم کردینے سے میئرکے لیے کچرا نہ اٹھانے کی کوئی وجہ نہیں رہے گی۔

چیئرمین پی۔ ایس۔ پی نے کہا کہ انہوں نے کراچی میں صرف نالوں کی صفائی اور سڑکوں پر پڑی آلائشیں اٹھانی ہیں۔ اگرسمت درست نہیں ہوگی توکسی کو بھی بلا لیں شہرصاف نہیں ہوگا۔ میئر کراچی پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میئرکو لندن کا اختیاردے دیں تو وہ وہاں بھی کچرے کے ڈھیر لگا دیں گے۔

شہر قائد کو صاف کرنے کا چیلینج قبول کرتے ہوئے مصطفٰی کمال نے کہا کہ کراچی کے لاجسٹکس مجھے دیے جائیں یہی وسائل کے استعمال سے 3 ماہ میں شہر کو صاف کر دیں گے۔

میئر کراچی کے حوالے سے انہوں نے مزید کہا کہ وسیم اختر کو کراچی کے لیے جو اربوں روپے کے فنڈز ملے وہ کدھر گئے۔ ان کا نام فوری طور پر ای سی ایل میں ڈالا جائے۔ کچرا اٹھانے کے نام پہ اربوں روپے خرچ کیے جا رہے ہیں لیکن پھر بھی شہر صاف نہیں ہو رہا۔ یہ کراچی میں رہنے والوں کے ساتھ بہت زیادتی ہے۔

کشمیر کے حوالے سے انہوں نے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہر موڑ پر کشمیریوں کے ساتھ ہیں۔ ہم کل سے کشمیر کا تین روزہ دورہ کر رہے ہیں۔ ہموہاں جا کر اپنے کشمیری بھائیوں سے اظہار یکجہتی کریں گے۔ مسٔلہ کشمیر پر حکومت کی مکمل حمایت کی ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers