قومی

عمران خان بتائیں ان سے این آر او مانگ کون رہا ہے؟ آصفہ بھٹو

 

عمران خان بتائیں ان سے این آر او مانگ کون رہا ہے؟ آصفہ بھٹو کا سوال۔ کہتی ہیں کہ والد نے ساڑھے گیارہ سال قید میں گزارے کسی سے ڈیل نہیں کی۔ عمران خان کی ناکامیوں کی فہرست ان کی کامیابیوں سے کہیں لمبی ہے۔ حکومت کو مسٔلہ کشمیر پر جو کرنا چاہیے وہ نہیں کر رہی۔

سابق صدر آصف علی زرداری کی بیٹی آصفہ بھٹو نے برطانوی نشریاتی ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ عمران خان اور جنرل پرویز مشرف کے دور حکومت میں بہت سی چیزیں ملتی جلتی ہیں۔ دونوں کی کابینہ ایک جیسی ہے۔
عمران خان کی ناکامیوں کی فہرست ان کی کامیابیوں سے کہیں لمبی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے جو وعدے کیے تھے وہ پورے نہیں کر سکے۔ نہ ہی وہ ایک کڑور نوکریاں دے پائیں ہیں اور نہ ہی انہوں نے 50 لاکھ گھر بنانے کا وعدہ پورا کیا ہے۔ لیکن انہوں نے ہزاروں گھر توڑے ضرور ہیں۔

مسٔلہ کشمیر پر انہوں نے بات کرتے ہوئے کہا کہ مسٔلہ کشمیر پر پارلیمنٹ سے دیر سے خطاب کرنا عمران خان کی ناکامی ہے۔ مسئلہ کشمیر سےمتعلق عالمی برادری سے زیادہ توقع نہ رکھنے کا بیان مضحکہ خیز تھا۔ کشمیر میں خواتین کی عصمتیں محفوظ نہیں اور بچوں کا قتل عام ہو رہا ہے۔ مظاہرین پر گولیاں چلائی جا رہی ہیں۔ میں اپنے والد کے الفاظ جیسا کہہ رہی ہوں کہ اگر یہ سب ہمارے دور میں ہوا ہوتا تو ہم، متحدہ عرب امارات، چین، روس، اور ایران جا کر پوری امت مسلمہ کو یکجا کرتے۔

این آر او کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان بار بار کیوں کہہ رہے ہیں کہ وہ کسی کو این آر او نہیں دیں گے۔ عمران خان بتائیں ان سے این آر او مانگ کون رہا ہے۔ میرے والد نے ساڑھے گیارہ سال قید میں گزارے مگر انہوں نے کسی سے ڈیل نہیں کی۔

آصفہ بھٹو نے مزید کہا کہ وہ جیل میں اپنے والد کے علاج سے مطمئن نہیں ہیں۔ کورٹ آرڈر کے تحت مجھے اپنے والد سے ملنے کی اجازت تھی مگر جب میں وہاں گئی تو انتظامیہ نے سب دروازے بند کر دیے۔ مریضوں کو اندر یا باہر جانے کے اجازت نہیں دی جا رہی تھی۔ مردوں نے ہمیں دھکے دئیے۔ مجھے میرے والد کا چہرہ تک بھی نہیں دیکھنے دیا گیا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers