بین الاقوامی

امریکہ افغانستان میں اپنی ناکامی کا ملبہ پاکستان پر ڈالتا رہا:وزیراعظم

پاکستان نے افغان جنگ میں امریکہ کا ساتھ دے کر بہت نقصان اٹھایا۔  وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان کی مدد کے باوجود امریکہ افغانستان میں اپنی ناکامی کا ملبہ پاکستان پر ڈالتا رہا۔ پاکستان نے 80 کی دہائی میں سی آئی اے کی مدد سے مجاہدین کو ٹریننگ دی۔ امریکہ کے افغانستان پہ قبضے کے بعد جہادی گروہ پاکستان کے خلاف ہو گئے۔

روسی خبرایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمارے 70 ہزار افراد مارے گئے۔ معیشت کو سو بلین ڈالر کا نقصان پہنچا۔  اگر ہم نائن الیون کے بعد امریکا کی جنگ نہ لڑتے تو ہم دنیا کا خطرناک ملک نہ ہوتے۔

انہوں نے مزید کہا کہ  افغانستان میں امریکا کے کامیاب نہ ہونے کا الزام پاکستان پر لگانا غیر منصفانہ ہے۔  بولے کہ سوویت یونین کے خلاف جنگ میں سی آئی اے نے مجاہدین کو ٹرین کرنے کے پیسے دیے اور جنگ کے بعد جب امریکہ نے افغانستان پر قبضہ کیا تو اس نے مجاہدین کو دہشتگرد قرار دے دیا۔

امریکہ کا ساتھ دینے پر یہ لوگ ہمارے خلاف ہو گئے۔ ہمیں اس جنگ سے الگ رہنا چاہیے تھا۔ اس کی وجہ سے ہمیں 72 ہزار جانوں کا نقصان اٹھانا پڑا۔

اتنے نقصانات کے باوجود بھی امریکا کی ناکامی پر پاکستان کو ہی قصوروار ٹھہرایا گیا اور امریکا جو اپنی ناکامیوں کا الزام پاکستان پر عائد کرتا ہے یہ پاکستان کے ساتھ ناانصافی ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers