قومی

بلاول بھٹو کسی دباؤ میں آ کر سندھودیش کی باتیں نہ کریں۔ شاہ محمود قریشی

سندھ حکومت سے بلاوجہ کائی چھیڑ چھاڑ نہیں کرے گا۔ بلاول بھٹو کسی دباؤ میں آ کر سندھودیش کی باتیں نہ کریں۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا قومی اسمبلی میں اظہار خیال۔ کہا کہ مسٔلہ کشمیر پر حکومت اور عوام ایک پیج پر ہیں۔ 17 ستمبر کو معاملہ پہلی بار یورپی پارلیمنٹ میں اٹھایا جائے گا۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ سندھ کے اراکین کے ذہنوں میں کوئی تشویش نہیں ہونی چاہیئے۔ سندھ ملک کی اہم اکائی ہے۔ ماضی کے کردار سے کسی کو اختلاف نہیں۔ ہم صوبائی خود مختاری پر کوئی آنچ نہیں آنے دیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں تعصب کی لہر ہے۔ سندھو دیش کی باتیں کرنے والے پٹ جائیں گے۔ انشااللہ آئين کا احترام تھا، ہے اور رہے گا۔ آپ کی حکومت کو بلاوجہ چھيڑ چھاڑ کرنے کا کوئی ارادہ نہيں۔ صوبائی خودمختاری پر آنچ نہيں آنے ديں گے۔

بلاول بھٹو کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ میں بلاول بھٹو سے کہنا چاہوں گا کہ آپ کے سیاسی سفر کی شروعات ہے۔ کسی کے دباؤ اور جذبات میں آ کر سندھو دیش کی بات کرنا مناسب نہیں۔

فروغ نسيم آرٹيکل 149 کے بيان پر وضاحت دے چکے ہيں۔ ان کے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کیا گیا۔ بلاول بھٹو جذبات میں آکر غیر ذمہ دارانہ بیان دینے سے گریز کریں۔

مہاجروں کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کیا مہاجروں نے پاکستان کے لیے ہجرت نہیں کی؟ کیا مہاجروں نے پاکستان بنانے کے لیے قربانیاں نہیں دیں؟ اپنی جائیدادیں نہیں چھوڑیں؟ وقت پڑنے پر ایک ایک سندھی انشا اللہ پاکستان کا ساتھ دے گا۔

کشمیرکے حوالے سے قومی اسمبلی کو بریف کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو اگست میں 4 خط بھیجے۔ سیکیورٹی کونسل میں بحث آپ کے سامنے پیش کرتا ہوں۔ 58 ممالک نے پاکستان کے نقطہ نظر کو مانا ہے یہ ہماری سب بڑی کامیابی ہے۔

17 ستمبر کو پہلی بار یورپین پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر اٹھایا جائے گا۔ یورپی یونین کی پارلیمنٹ کے ممبران نے پاکستان کے حق میں بات کی۔ 27 ستمبر کو اوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں عمران خان پاکستان اور کشمیر کی آواز پیش کریں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج بھارت جتنا دفاعی پوزیشن میں دکھائی دیا جا رہا ہے ماضی میں وہ کبھی نہیں دکھائی دیا۔ بھارت پروپیگنڈا اس لیے کر رہا ہے کیونکہ وہ آج منہ دکھانے کے قابل نہیں۔ اس نے مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق پامال کر رکھے ہیں ۔پوری دنيا ميں کشمير کے حق ميں آوازیں اٹھ رہی ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کل اپوزیشن کے احتجاج سے تاثر گیا کہ مسئلہ کشمیر پر پروڈکشن آرڈر کو فوقیت ہے۔ ہم نے اپوزیشن کو احتجاج سے نہیں روکا۔ ایک دوسرے سے سیکھنا اور ساتھ لے کر چلنا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers