قومی

 نوجوان پر تشدد کرنے والے ڈولفن اہلکاروں کو معطل کر دیا گیا

لاہور کیولری پل پر ڈولفن اہلکاروں کی وردی میں غنڈہ گردی۔ نوجوان کو روکا، تھپڑ مارے، پھر حوالات لے گئے۔ ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد حکام کا ایکشن، اہلکار معطل، انکوائری شروع ہو گئی۔ آئی جی پنجاب نے معاملے کی رپورٹ طلب کر لی۔

لاہور شہر میں تشدد کے واقعات میں دن بدن اضافہ ہوتا چلا جا رہا ہے۔ اعلٰی حکام کی ناقص حکمت عملی کے باعث لاہور شہر میں تشدد کے واقعات پیش آ رہے ہیں۔

کیولری پل پہ ایک اور تشدد کا واقعہ پیش آیا۔ جس میں ڈولفن اہلکاروں نے نوجوان کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا۔ ویڈیو منظر عام پہ آنے کے بعد اعلٰی حکام نے نوٹس لے کر چاروں اہلکاروں کو معطل کر دیا۔  ویڈیو میں ڈولفن اہلکاروں کو موٹرسائیکل سوار نوجوانوں پر تشدد کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔

موٹرسائیکل سوار کے مطابق ڈولفن اہلکاروں نے موٹرسائیکل کے کاغذات نہ ہونے پر تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔ تشدد کے بعد موٹرسائیکل سواروں کو تھانہ نصیر آباد میں بند کر دیا۔

آئی جی پنجاب نے معاملے کا نوٹس لے لیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے احکامات جاری کئے جا چکے ہیں۔

سی پی او لاہور کا کہنا ہے کہ ان کے خلاف انکوائری کی جا رہی ہے۔ جس میں اگر یہ گنہگار ثابت ہوئے تو ان کے خلاف مقدمات درج کر کے محکمانہ انکوائری بھی کی جائے گی۔

لاہور شہر میں بڑھتے ہوئے تشدد کے واقعات پہ اعلٰی حکام نے حکمت عملی تیار کی ہے کہ جو بھی اہلکار تشدد کرے گا اس کے خلاف فوری طور پر کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ اور اس کے خلاف محکمانہ انکوائری بھی کی جائے گی۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers