قومی

شاہد خاقان عباسی کو پیرول پر رہائی مل گئی

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو پیرول پہ رہا کر دیا گیا۔ سابق وزیراعظم کو تایا کی نماز جنازہ میں شرکت کرنے کے لیے مشروط اجازت مل گئی۔ ضلعی انتظامیہ فل پروف سیکیورٹی کی ذمےداری لے تو نیب انہیں جنازے میں شرکت کی اجازت دے۔ عدالت کا حکم۔

احتساب عدالت نے ن لیگی رہنما شاہد خاقان عباسی کو پیرول پر رہا کرنے کا حکم دیدیا۔  ن لیگی رہنماء کی بہن کی جانب سے ان کے تایا کے انتقال پر جنازے میں شرکت کے لیے شاہد خاقان کو پیرول پر رہا کرنے کی درخواست دائر کی گئی تھی۔

سماعت احتساب عدالت کی جج محمد بشیر نے کی جس میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ انسانی ہمدردی کے تحت نماز جنازہ میں شرکت کیلئے رہائی کی اجازت دی جائے۔

کہا گیا کہ جنازہ شام 5 بجے ہے۔ اگر سابق وزیراعظم کو رہائی دی جائے تو جنازے کا وقت تبدیل کر سکتے ہیں۔ نیب کے وکیل نے دلائل میں کہا کہ یہ اختیار عدلت کے پاس نہیں۔ ملزم اس وقت نیب کی حراست میں ہے۔ رہائی دینا نہ دینا نیب کے اختیار میں آتا ہے۔

اس پر ن لیگی رہنماء کی ہمشیرہ سعدیہ عباسی نے مؤقف اپنایا کہ وہ نیب کے آفس گئی تھیں مگر انہوں نے کہا کہ عدالت اجازت دے سکتی ہے۔ شاہد عباسی 60 دن سے زیادہ عرصے سے جسمانی ریمانڈ پر ہیں۔ اتنے دن بعد اب مزید کیا تفتیش ہونی ہے۔

عدالت نے تفتیشی افسر کا بھی مؤقف سننے کے بعد فیصلہ دیا کہ اگر ضلعی انتظامیہ فل پروف سیکیورٹی کی ذمےداری لے تو نیب انہیں جنازے میں شرکت کی اجازت دے۔

عدالت نے کہا کہ  ڈی جی نیب پیرول پر رہائی کے لیے تمام ضروری اقدامات مکمل کر لیں۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ شاہد خاقان عباسی کے تایا بریگیڈیئر ریٹائرڈ محمد تاج عباسی انتقال کر گئے۔ بریگیڈیئر ریٹائرڈ محمد تاج عباسی کی نماز جنازہ ان کے آبائی گاؤں اپر دیول مری میں ادا کی جائے گی۔

 

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers