قومی

لیاقت قائمخانی 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

قارون کا خزانہ کیسے بنایا؟ کراچی کے اجڑے باغوں کا امیر مالی سب کچھ بتائے گا۔ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے لیاقت قائمخانی کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ دے دیا۔ ملزم عدالت میں بیماری کا رونا روتا رہا۔

نیب ٹیم نے سابق ڈی جی پارکس لیاقت قائمخانی کو آج احتساب عدالت میں جج محمد بشیر کے روبرو کیا۔

سماعت میں جج نے سوال کیا کہ کون ہے لیاقت قائم خانی؟ آپ ہیں؟ جس پر سابق ڈی جی پارکس نے جواب دیا جی میں ہی لیاقت ہوں۔

نیب حکام کی جانب سے عدالت میں ملزم کے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی۔

نیب حکام نے اپنے دلائل میں کہا کہ لیاقت قائمخانی نے بطور ڈی جی پارکس غیر قانونی الاٹمنٹس کیں۔ غیر قانونی طور پر باغ ابن قاسم کی زمین گلیکسی انٹرنیشنل کو دی گئی۔

مزید استدعا کی کہ لیاقت قائمخانی کے گھر سے خزانہ ملا ہے اس کی منی ٹریل بھی ابھی پتہ کرنی ہے۔ اس لیے ان کا ریمانڈ دیا جائے۔

لیاقت قائمخانی نے اس پر کہا کہ میں شوگر کا مریض ہوں۔ پرہیزی کھانا کھاتا ہوں۔ میں نے ہر روز رات کو انسولین بھی لینا ہوتی ہے۔ میں نے تو زمین کی الاٹمنٹ پر ایک دستخط بھی نہیں کیے۔ اگرایک بھی دستخط ثابت ہو جائے تو بے شک مجھے پھانسی پر چڑھا دیں۔

احتساب عدالت نے لیاقت قائمخانی کو 14 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کرتے ہوئے انہیں سگے بھائیوں سے ملاقات کی اجازت دیدی۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ جعلی اکاؤنٹس کیس میں تحقیقات کرتے ہوئے نیب راولپنڈی نے اسلام آباد میں رہائش پذیر کراچی کے سابق ڈی جی پارکس لیاقت قائم خانی کے گھر پر چھاپہ مارا تھا۔

چھاپے کے دوران گھر میں کروڑوں روپے کی مالیت کی گاڑیاں سامنے آئیں تھیں۔ گاڑیوں میں مرسڈیز بینز،لینڈ کروزر، ہائی لکس ،فارچونر اور رینج روور بھی شامل ہیں۔

اس کے علاوہ جدید ترین اسلحہ بھی برآمد ہوا تھا۔ ذرائع کے مطابق لیاقت علی کے گھر سے کلُ 243 چیزیں برآمد ہوئی تھیں۔ گھر سے مہران ٹاؤن کے 20 پلاٹوں کی فائلیں بھی ملیں۔ چھاپے میں ڈالرز، ریال، درہم، سونے کے زیورات اور بانڈز بھی برآمد کئے گئے تھے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ جعلی اکاؤنٹس کیس میں اب تک مجموعی طور پر گرفتاریوں کی تعداد 45 ہو گئی ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers