انٹرٹینمنٹقومی

لاہور عدالت نے رابی پیرزادہ کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیے

خطرناک جانور پالنا رابی پیرزادہ کے گلے پڑ گیا۔ لاہور کچہری نے گلوکارہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیے۔ عدالت کا گلوکارہ کو 11 اکتوبر تک پیش کرنے کا حکم۔ محکمہ وائلڈ لائف نے ملزمہ کا چالان عدالت میں پیش کر دیا۔

ماڈل ٹاؤن کچہری میں بغیر اجازت جنگلی جانور رکھنے کے کیس میں گلوکارہ رابی پیرزادہ کے خلاف سماعت ہوئی۔

رابی پیرزادہ سماعت میں خاضر نہ ہوئیں جس کی وجہ سے لاہور ماڈل ٹاؤن عدالت نے ان کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔ جوڈیشل مجسٹریٹ حارث صدیقی نے اداکارہ کو طلب کر رکھا تھا۔

محکمہ وائلڈ لائف(جنگلی حیات) کے حکام نے 11 ستمبر کو اداکارہ کا چالان کیا تھا۔ جسے انہوں  نے عدالت میں پیش کر دیا۔ محکمہ وائلڈ لائف حکام کا موقف تھا کہ رابی پیرزادہ عدالت کو یہ بتائیں کہ یہ جانور کس کے ہیں۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ محکمہ وائلڈ لائف نے 11 ستمبر کو گلوکارہ کا چالان تیار کیا تھا۔

11 ستمبر کو ڈسٹرکٹ وائلڈلائف آفیسر لاہور تنویر احمد جنجوعہ اور دیگر سٹاف پر مشتمل ٹیم نے ان کے خلاف باضابطہ کارروائی شروع کر دی تھی۔ محکمہ وائلڈ لائف کے مطابق گلوکارہ نے وائلڈ لائف ایکٹ کی خلاف ورزی کی ہے۔

حکام کا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ جانور وائلڈ لائف ایکٹ کے تھرڈ شیڈول میں شامل ہیں۔ ان کا لائسنس کسی کو بھی جاری نہیں ہوسکتا۔

وائلڈلائف ایکٹ 1974 ترمیم شدہ 2007 کی دفعات 9 اور12 کے تحت چالان کیا گیا تھا۔ جس کی سزا 2 سے 5 سال قید اور تقریباً 20 ہزار روپے جرمانہ ہے۔

اس پر ردعمل دیتے ہوئے ٹویٹر پہ جاری کردہ اپنے پیغامات میں رابی پیرزادہ کا کہنا تھا کہ وہ سب جانور کرائے کے ہیں، جو کہ گانے کی شوٹنگ کے لیے لیے گئے تھے۔

اس کے علاوہ انہوں نے کہا تھا کہ پچھلے پانچ سال سے سانپوں شیروں اور مگر مچھوں سے کھیل رہی ہوں کبھی نوٹس نہیں آیا۔ پانچ سال سے سانپ یاد نہیں آئے، مودی کی وڈیو کے باد کیسے خیال آیا؟

آپ کو بتاتے چلیں کہ اس چالان سے قبل رابی پيرزادہ نے اژدھوں، مگرمچھ کے ساتھ اپنی ويڈيو بنا کر سوشل ميڈيا پر اپلوڈ کی تھی۔ جس ميں گلوکارہ نے سانپوں اور مگرمچھ کے ساتھ بھارتی وزيراعظم نریندر مودی کو دھمکياں دی تھيں۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers