بین الاقوامی

امریکہ کے 14 قانون دانوں کا کشمیر سے کرفیو ہٹانے کا مطالبہ

مقبوضہ کشمیر کو جیل بنے 55واں دن۔ مارکٹیں موبائل فون اور انٹرنیٹ بند۔ وادی میں اشیاء خوردونوش کا بحران۔ ادویات بھی میّسر نہیں۔ چپے چپے پر اہلکار تعینات۔ امریکہ کے 14 قانون دانوں نے کشمیر سے کرفیو ہٹانے کے لیے مودی کو خط لکھ دیا۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بھارتی امریکی قانون ساز پرمیلا جیاپال نے امریکی کانگریس کے 13 دیگر ممبروں کے ساتھ ہندوستان کے وزیراعظم نریندر مودی سے پرزور اپیل کی ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال پر تشویش کا ازالہ کریں اور علاقے میں مواصلات کو ختم کرنے کا اقدام ختم کرے۔

قانون سازوں نے مشترکہ بیان میں کہا کہ ملک بھر میں ہزاروں خاندانوں کی جانب سے جو کشمیر میں اپنے خاندان والوں سے رابطہ کرنے سے قاصر ہیں، ہم ہندوستان کے وزیراعظم سے مواصلات پہ کرفیو کو ختم کرنے اور جاری انسانی خدشات کو دور کرنے کی درخواست کر رہے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ہندوستان ایک اہم امریکی شراکت دار اور دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہے۔ اس وجہ سے ہم امید کرتے ہیں کہ حکومت ہند قیادت کا مظاہرہ کرے گی اور ان پابندیوں کو ختم کرے گی۔ کشمیری عوام بھی دوسرے لوگوں کی طرح کے حقوق کے مستحق ہیں۔

اس کے علاوہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو آج 55واں دن ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں ڈوڈہ ، بھدرواہ اور کشتواڑ میں ہندوستانی حکومت کی جانب سے علاقے کی خصوصی حیثیت منسوخ کرنے کے خلاف مکمل شٹ ڈاؤن منایا گیا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی میں ضلع گاندربل میں 3 کشمیری نوجوانوں کو شہید کردیا ہے۔ علاقے میں بھارتی قابض فوجیوں کا آپریشن تاحال جاری ہے۔

دوسری جانب صورہ میں سیکڑوں کشمیری سڑکوں پر نکل آئے۔ انہوں نے اقوام متحدہ میں کشمیر کا مقدمہ پیش کرنے پر وزیراعظم عمران خان کے حق میں نعرے لگائے۔ ۔ کشمیری نوجوان نے وزیراعظم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اللہ کے بعد عمران خان پر بھروسہ ہے۔

عہدیداروں اور دو عینی شاہدین کے مطابق، سری نگر میں مقررین سے لیس پولیس وینوں نے آج نقل مکانی پر پابندیوں کے بارے میں عوامی اعلانات کیے ہیں۔ جبکہ کسی بھی احتجاج کو روکنے کے لئے اضافی دستے کو بھی تعینات کر لیا گیا ہے۔

اس کے علاوہ ظالم فوجیوں نے خاردار تاروں سے سری نگر کے مرکزی کاروباری مرکز تک رسائی روک دی ہے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں کشمیریوں کا مقدمہ بھرپور انداز میں لڑا۔ انہوں نے پوری دنیا میں مودی اور آر ایس ایس کا پردہ چاک کیا۔ اس کے علاوہ پوری دنیا کو کشمیر میں ہونے والی بھارتی بربریت اور مظالم سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم پوری دنیا میں کشمیر کے سفیر بن کر ابھرے ہیں۔ ’عمران خان وائس آف کشمیر‘ ٹوئٹر پر عالمی پینل پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا ہے۔ ان کا تاریخی خطاب دنیا بھر میں قابل ستائش قرار دیا جا رہا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers