قومی

وزیراعظم عمران خان کا ائیرپورٹ پر شاندار استقبال کیا گیا

وزیراعظم کا طیارہ اسلام آباد ائیرپورٹ پر لینڈ کر گیا۔ وزیراعظم اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے تاریخی خطاب کے بعد وطن واپس پہنچ گئے۔ کارکنوں کی بڑی تعداد نے ان کا استقبال کیا۔ وزیراعظم نے کارکنوں سے خطاب بھی کیا۔

وزیراعظم نے کارکنوں سے خطاب میں کہا کہ میں سب سے پہلے اپنی قوم کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ جس طرح آپ نے میرے اور ہم سب کے لیے دعائیں کیں کہ ہم کشمیریوں کا مقدمہ اقوام متحدہ میں بھرپور طریقے سے رکھیں۔

انہوں نے کہا کہ میں بشریٰ بیگم کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے میرے لیے بہت ساری دعائیں بھی کیں۔

انہوں نے کہا کہ یاد رکھیں کہ یہ جو ہم کشمیریوں کے ساتھ کھڑیں ہیں۔ دنیا ان کے ساتھ کھڑی ہو یا نہ ہو ہم نے ان کا ساتھ نہیں چھوڑنا۔

بولے کہ ہم ان کے ساتھ اس لیے کھڑے ہیں کیونکہ ہم اللہ کو خوش کرنا چاہتے ہیں اس لیے کہ یہ جہاد ہے۔ 80 لاکھ لوگوں کو ہندوستان کی فوج نے کرفیو میں بند کر کے رکھا ہوا ہے۔

جدوجہد میں اونچ نیچ ہوتی ہے۔ جدوجہد اتاڑ چڑھاو کا نام ہے۔ اچھا اور برا وقت آتا ہے۔

آپ نے برے وقت میں مایوس نہیں ہونا۔ کشمیر کے لوگ آپ کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ جب تک آپ ان کے ساتھ کھڑیں ہیں وہ لوگ اپنی جدوجہد کرتے رہیں گے۔

کشمیری آزادی جیتیں گے۔ برے وقت میں آپ نے گھبرانہ نہیں۔ وہاں بچے، بوڑھے، نوجوان اور عورتیں سب آپ کی طرف دیکھ رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ میں وعدہ کرتا ہوں کہ ہم ہر فورم کے اوپر مودی کی فاشسٹ اور مسلمانوں سے نفرت کرنے والی حکومت کو بےنقاب کریں گے۔
بولے کہ میرے ساتھ جو20 سال سے زیادہ عرصے سے سفر کر رہے ہیں میں نے ان کو ہمیشہ ایک چیز سمجھائی ہے کہ کوشش انسان کی ہوتی ہے۔ کامیابی اللہ دیتا ہے۔

وزیراعظم کا اسلام آباد ائیرپورٹ پر والہانہ استقبال کیا گیا۔ اس موقع پر فردوس عاشق اعوان، فیصل جاوید، شبلی فراز اور دیگر رہنماء بھی موجود تھے۔
آپ کو بتاتے چلیں کہ وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کے اجلاس میں کشمیریوں کا مقدمہ بھرپور انداز میں لڑا۔ انہوں نے پوری دنیا میں مودی اور آر ایس ایس کا پردہ چاک کیا۔ اس کے علاوہ پوری دنیا کو کشمیر میں ہونے والی بھارتی بربریت اور مظالم سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم پوری دنیا میں کشمیر کے سفیر بن کر ابھرے ہیں۔ ویلکم ہوم پی-ایم آئی کے سماجی رابطے کی ویبسائٹ ٹویٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا ہے۔ ان کا تاریخی خطاب دنیا بھر میں قابل ستائش قرار دیا جا رہا ہے۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers