بین الاقوامی

سعودی-ایران جنگ عالمی معیشیت کے لیے تباہ کن ہو گی

سعودی عرب اور ایران کی جنگ عالمی معیشیت کے لیے تباہ کن ہو گی۔ ولی عہد محمد بن سلمان کی وارننگ۔ کہتے ہیں کہ عالمی طاقتوں نے تہران کے خلاف سخت اقدامات نہ کیے تو حالات مزید بگڑیں گے اور عالمی امن کو دھچکا لگے گا۔ تیل کی تنصیبات پر حملے کو احمقانہ قرار دے دیا۔

امریکی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا کہنا تھا کہ ایران نے ایٹم بم بنایا تو سعودی عرب بھی ایٹم بم بنائے گا۔ ایران کوروکنے کیلئے دنیا کو متحد ہونا پڑے گا۔ اگر دنیا تہران کیخلاف ٹھوس کارروائی کرنے کے لیے آگے نہیں آئی تو تیل کی قیمتوں میں ایسا ناقابل یقین اضافہ ہوسکتا ہے جو ہم نے زندگی میں کبھی نہیں دیکھا ہوگا۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے آئل تنصیبات پر حملے کا الزام ایران پر لگاتے ہوئے کہا کہ حملے سے عالمی سطح پر پانچ فیصد آئل سپلائی متاثر ہوئی۔ انہوں نے تیل کی تنصیبات پر حملے کو احمقانہ قرار دے دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے ساتھ مسئلے پر فوجی کے بجائے سیاسی حل کو ترجیح دیں گے۔ اگر جنگ ہوئی تو اس سے عالمی معیشیت تباہ ہو جائے گی۔

جمال خاشقجی کے قتل کے حوالے سے محمد بن سلمان نے کہا کہ میں نے قتل کے احکامات نہيں ديے۔ جمال خاشقجی کا قتل سعودی اہلکاروں کے ہاتھوں ہوا۔ اس لیے ملک کا رہنما ہونے کی حیثیت سے اس کی ذمہ داری لیتا ہوں۔

مزید کہا کہ ان کے قاتلوں کو جلد بے نقاب کریں گے۔ ان کو انصاف دلانے میں ہم کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے۔ قتل کا الزام ثابت ہونے پر ملزموں کو عہدے کی پرواہ کئے بغیر سزا دیں گے۔ اس بات کویقینی بنایا جائے گا کہ آئندہ ایسا نہ ہو۔

انہوں نے مزید کہا کہ سعودی عرب میں لوٹی دولت واپس لانے کیلئے کریک ڈاؤن ضروری تھا۔ یہ کریک ڈاؤن قوانین کے مطابق کیا گیا تھا۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers