قومی

متحدہ اپوزیشن کا آزادی مارچ پر اتفاق

متحدہ اپوزیشن کی رہبر کمیٹی نے آزادی مارچ پر اتفاق کر لیا ہے۔ دھرنے اور لاک ڈاؤن پر ڈیڈلاک ابھی بھی بر قرار ہے۔ اکرم درانی کہتے ہیں کہ موجودہ حکومت استفعٰی دے اور نئے عام انتخابات کرائے جائیں۔

اسلام آباد: متحدہ اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کا آزادی مارچ پر اتفاق

اسلام آباد: متحدہ اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کا آزادی مارچ پر اتفاقاپوزیشن کا دھرنا اور لاک ڈاؤن کے معاملے پر ڈید لاک بر قرار #AzadiMacrh #Islamabad #NewsReport #AapNews

Posted by Aap News on Wednesday, October 9, 2019

 

اسلام آباد میں رہبر کمیتی کے اجلاس کے بعد کنوینئر اکرم درانی نے بتایا کہ آزادی مارچ پر امن ہو گا اور ماورائے آئین کوئی اقدام نہیں اٹھائیں گے۔

کہا کہ آئین کے اندر جتنی بھی اسلامی دفعات ہیں، ان کا ہم احترام کریں گے۔

مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال نے آرڈیننس کے ذریعے سی پیک اتھارٹی کے قیام کو غیر قانونی قرار دے دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ سی پیک جیسے قومی منصوبے کی اتھارٹی آرڈیننس سے بنا کے اس کو متنازعہ کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

پیپلز پارٹی کے فرحت اللہ بابر نے کہا کہ آزادی مارچ پر ہم تمام جماعتیں متفق ہیں۔ ہم اکٹھے تھے، ہیں اور رہیں گے۔

آپ کو بتاتے چلیں کہ چند روز قبل شہباز شریف کی زیر صدارت ن لیگ کا اجلاس ہوا تھا جس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال کا کہنا تھا کہ دھرنے ميں بھرپور حصہ ليں گے کیونکہ ہم نے اے پی سی فيصلے کے ساتھ جانا ہے۔ ملک ميں فوری طور پر اليکشن کی راہ ہموار کرنا ہوگی اورحکومت کو ہٹانے کے لیے تحریک کا ہر اول دستہ بنیں گے۔

مزید کہا کہ عوام کو پتہ چل گیا ہے کہ ان کے ساتھ تبدیلی کے نام پر دھوکا ہوا ہے۔ ہمارے خلاف انتقامی کارروائیاں کی جارہی ہیں۔ اب حکومت سے نجات کے لیے باقاعدہ مہم چلائی جائے گی۔

Comment here

379,066Subscribers
8,414Followers